13.3 C
Islamabad
بدھ, مارچ 3, 2021

آپریشن ردالفساد کے ذریعے ٹیررازم سے ٹورازم تک کا سفر طے کیا، ترجمان پاک فوج

تازہ ترین

شاہد آفریدی کی ‘برتھ ڈے ٹوئٹ’، کہیں ریکارڈ نہ بدل جائے؟

شاہد آفریدی نے 25 سال پہلے اپنی پہلی ون ڈے اننگز میں صرف 37 گیندوں پر سنچری بنائی تھی، جو کرکٹ تاریخ کی تیز...

یوسف رضا گیلانی کو سینیٹ انتخابات میں فتح ہوگی، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن رہنما اور قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف میں اپنے ہی اراکین...

بھارت سے کپاس کی درآمد کا امکان، ٹیکسٹائل ملز ناخوش

لائن آف کنٹرول پر سیزفائر معاہدے کی بحالی کے بعد پاک-بھارت تعلقات کی مرحلہ وار بحالی کا امکان ہے اور ہو سکتا ہے کہ...

پاکستان اضافی بجلی سے بٹ کوائن بنا کر اپنا تمام قرضہ اتار سکتا ہے

حکومتِ پاکستان کا کہنا ہے کہ اس وقت ملک کی ضرورت سے زیادہ بجلی پوری ہو رہی ہے تو آخر پاکستان بٹ کوائن مائننگ...
- Advertisement -

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں نے عوام کی زندگی مفلوج کرنے کی ناکام کوشش کی، ردالفساد کے تحت بڑے بڑے دہشت گرد نیٹ ورکس ختم کیے گئے ہیں۔ بھارتی میڈیا نے جھوٹ بول بول کر اپنی ساکھ ختم کرلی ہے۔ جعلی خبروں کا بھارتی نیٹ ورک بے نقاب کرنے کے لیے کام جاری ہے۔ یہ نیٹ ورک جھوٹی خبریں پھیلا کر پاکستانی نوجوانوں کو نشانہ بناتے ہیں۔

راولپنڈی میں پریس بریفنگ دیتے ہوئے انہوں نے آپریشن رد الفساد کے 4 سال پورے ہونے کے حوالے سے اظہار خیال کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی قیادت میں 2017ء میں اس آپریشن کا باقاعدہ آغاز ہوا اور ہر پاکستانی آپریشن ردالفساد کا سپاہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس عرصے میں ایک ہزار 684 کراس بارڈر واقعات ہوئے۔ آپریشن ردالفساد کے تحت خیبر آپریشن فور بھی کیا گیا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ طاقت کا استعمال صرف ریاست کی صوابدید ہے، آپریشن ردالفساد کا آغاز دہشت گردی کے خلاف ہوا تھا۔ عوام کی مدد سے سیکیورٹی فورسز نے دہشت گردی کا خاتمہ کیا۔ 750 کلو میٹر رقبے پر ریاست کی رٹ بحال کی گئی، کراچی میں چینی قونصلیٹ پر حملے کو ناکام بنایا گیا، ملک بھر سے 72 ہزار سے زائد غیر قانونی اسلحہ برآمد کیا گیا۔ گوادر میں نجی ہوٹل پر حملہ کرنے والے دہشت گردوں کو جہنم واصل کیا گیا،

انہوں نے یقین دلایا کہ اس آپریشن کے بعد ہم نارمل صورتحال کی طرف جا رہے ہیں۔ 4 سال میں 37 ہزار 428 اہلکاروں کی ٹریننگ کی گئی، 3 ہزار 895 لیویز اہلکاروں کی ٹریننگ ہوئی جبکہ417 کیسز ملٹری کورٹس کو ریفر کیے اور 195 دہشت گردوں کو مختلف سزائیں سنائی گئیں۔ ساتھ ہی ٹارگٹ کلنگ پر موثر طریقے سے قابو پاتے ہوئے دہشت گردوں کے بیانیے کو موثر طریقے سے ناکام بنایا۔ ان 4 سالوں کے دوران 1200 سے زائد شدت پسند ہتھیار ڈال چکے ہیں۔

میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ آج کراچی میں امن و امان کی صورتحال بہت بہتر ہے، کراچی کرائم انڈیکس میں آج 106 نمبر پر ہے۔ دوسری طرف قبائلی اضلاع میں 31 بلین کی لاگت سے ترقیاتی کاموں کا آغاز ہوچکا ہے، ٹیررازم سے ٹورازم تک کا سفر انتہائی دشوار ہے، کورونا وبا کے دوران دانشمندی سے چینلج پر قابو پایا۔ پاک افغان بارڈر کا کام بھی 84 فیصد مکمل کر لیا گیا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ عالمی وبا کورونا ویکسین کے لیے میڈیا ورکرز کو بھی فہرست میں رکھا ہوا ہے۔ کورونا ویکسین کی آگے مزید کھیپ آئے گی جس سے مرحلہ وار پوری قوم مستفید ہوسکے گی۔

مزید تحاریر

شاہد آفریدی کی ‘برتھ ڈے ٹوئٹ’، کہیں ریکارڈ نہ بدل جائے؟

شاہد آفریدی نے 25 سال پہلے اپنی پہلی ون ڈے اننگز میں صرف 37 گیندوں پر سنچری بنائی تھی، جو کرکٹ تاریخ کی تیز...

یوسف رضا گیلانی کو سینیٹ انتخابات میں فتح ہوگی، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن رہنما اور قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف میں اپنے ہی اراکین...

بھارت سے کپاس کی درآمد کا امکان، ٹیکسٹائل ملز ناخوش

لائن آف کنٹرول پر سیزفائر معاہدے کی بحالی کے بعد پاک-بھارت تعلقات کی مرحلہ وار بحالی کا امکان ہے اور ہو سکتا ہے کہ...

پاکستان اضافی بجلی سے بٹ کوائن بنا کر اپنا تمام قرضہ اتار سکتا ہے

حکومتِ پاکستان کا کہنا ہے کہ اس وقت ملک کی ضرورت سے زیادہ بجلی پوری ہو رہی ہے تو آخر پاکستان بٹ کوائن مائننگ...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے