22.2 C
Islamabad
منگل, اپریل 13, 2021

خواتین کا عالمی دن اور تاریخ رقم کرنے والی پاکستانی خواتین

تازہ ترین

ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام بھی کہہ رہی ہے کہ گھر جاؤ، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر میاں حمزہ شہباز شریف کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا اب...

سندھ حکومت نے سعید غنی سے تعلیم کا قلمدان واپس لینے کا فیصلہ کرلیا

سندھ کی صوبائی حکومت میں وزیر تعلیم و لیبر سعید غنی سے محکمہ تعلیم کا قلمدان لینے کا فیصلہ کرلیا گیا، ساتھ ہی کابینہ...

ن لیگ کو چاہیے کہ پیپلز پارٹی جیسی سیاست کرے، فواد چودھری

وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن احتجاجی سیاست سے باہر آکر پیپلز پارٹی جیسی سیاست...

پیپلز پارٹی کو نوٹس مسلم لیگ ن نے نہیں، پی ڈی ایم نے بھیجا تھا، مریم نواز

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جس کے لیے کہا جاتا تھا کہ سیاست ختم ہوگئی اس...
- Advertisement -

آج خواتین کا عالمی دن ہے، سیاست کے میدان سے لے کر ووٹ اور یکساں تنخواہ کے حق تک کی جدوجہد کا دن۔

8 مارچ کو خواتین کا دن منانے کی روایت کا آغاز روس سے ہوا تھا، جس نے 1917ء میں اس دن کو قومی تعطیل قرار دیا تھا۔ 1967ء تک اسے دنیا بھر کی خواتین تحاریک اختیار کر چکی تھیں یہاں تک کہ 1977ء میں اقوام متحدہ نے اس دن کو خواتین کے عالمی دن کی حیثیت دی۔

یہ پاکستان کی تاریخ کی ان عظیم ہستیوں کو بھی یاد کرنے کا دن ہے، جنہوں نے تمام تر رکاوٹوں، مسائل اور تنقید کے باوجود اپنی جدوجہد جاری رکھی۔

فاطمہ جناح

فاطمہ جناح ملک کی تاریخ کی اہم ترین سیاست دان تھیں۔ بانئ پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کی بہن، جنہوں نے قدم قدم پر اپنے بھائی کا ساتھ دیا، یہاں تک کہ آخری لمحات تک ان کے ہمراہ رہیں۔ ان کے بعد ملک کی سیاست میں بھی محترمہ فاطمہ جناح کا بہت نمایاں کردار تھا۔ ان کی خدمات پر قوم نے انہیں مادرِ ملّت یعنی قوم کی ماں اور خاتونِ پاکستان کے خطابات دیے۔ وہ ہمیشہ پاکستانیوں کے دلوں میں زندہ رہیں گی۔


بے نظیر بھٹو

نہ صرف پاکستان بلکہ پوری مسلم دنیا کی پہلی جمہوری طور پر منتخب ہونے والی خاتون سربراہ۔ بے نظیر بھٹو پاکستان پیپلز پارٹی کے بانی اور سابق وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کی صاحبزادی تھیں، جنہوں نے اپنے والد کے بعد پارٹی قیادت سنبھالی۔ بدترین آمریت میں بھی جمہوریت کے حق میں ڈٹی رہیں۔ دو مرتبہ ملک کی وزیر اعظم منتخب ہوئیں اور اسی جدوجہد کے دوران 2007ء میں ایک قاتلانہ حملے میں اپنی جان بھی دے گئیں۔


بیگم شائستہ اکرام اللہ

پاکستان کی قانون ساز اسمبلی میں منتخب ہونے والی پہلی خاتون، معروف سفارت کار اور مصنفہ بیگم شائستہ نے ملکی سیاست میں خواتین کے کردار کی راہیں ہموار کی تھیں۔ آپ یونیورسٹی آف لندن سے پی ایچ ڈی کرنے والی پہلی مسلمان خاتون بھی تھیں۔ اس کے علاوہ مراکش میں پاکستان کی سفیر بھی رہیں اور اقوامِ متحدہ میں نمائندہ بھی۔


ڈاکٹر شمشاد اختر

معروف ماہر معیشت، ڈاکٹر شمشاد اختر بینک دولت پاکستان کی پہلی خاتون سربراہ تھیں۔ اس کے علاوہ وہ اقوام متحدہ کی انڈر سیکریٹری جنرل اور عالمی بینک کی نائب صدر بھی رہ چکی ہیں۔


مریم مختیار

پاک فضائیہ کی فائٹر پائلٹ، جنہوں نے صرف 22 سالہ کی عمر میں شہادت پائی۔ میانوالی کے قریب ایک تربیتی پرواز کے دوران طیارے میں ایک فنی خرابی ہو گئیں۔ مریم چاہتیں تو اپنے لڑاکا طیارے سے بروقت نکل سکتی تھیں لیکن انہوں نے نیچے موجود گنجان آبادی کو بچانا اپنی جان سے زیادہ عزیز سمجھا۔ ایک گرتے طیارے کو آبادی پر گرنے سے بچاتے بچاتے اتنی دیر ہو گئی کہ ان کے لیے خود کو بچانا ممکن نہ رہا۔


ارفع کریم

نوعمر پاکستانی طالبہ جنہوں نے 2004ء میں صرف 9 سال کی عمر میں کم عمر ترین مائیکروسافٹ سرٹیفائیڈ پروفیشنل (MCP) کا عالمی ریکارڈ قائم کیا۔ دسمبر 2011ء میں انہیں ایک دورہ پڑا جس سے ان کے دماغ کو نقصان پہنچا۔ انہیں تشویش ناک حالت میں ہسپتال داخل کیا گیا۔ وہ 14 جنوری 2012ء کو صرف 16 سال کی عمر میں چل بسیں۔


ملالہ یوسف زئی

خواتین کی تعلیم کے لیے ایک توانا آواز اور پاکستان کی پہلی خاتون اور سب سے کم عمر میں نوبیل انعام یافتہ، ملالہ یوسف زئی نے 11 سالہ کی عمر میں "گل مکئی” کے نام سے بی بی سی کے لیے بلاگ لکھنا شروع کیا۔ تب تحریکِ طالبان پاکستان نے سوات کے علاقے پر قبضہ کر رکھا تھا اور ان کی تحاریر سے جو طوفان کھڑا ہوا اس کا نتیجہ یہ نکلا کہ اکتوبر 2012ء میں طالبان نے ان پر قاتلانہ حملہ کیا، جس میں وہ بری طرح زخمی ہو گئیں۔ لیکن ان کی جان بچ گئی۔ وہ آج بھی خواتین کے حقوق اور ان کی تعلیم کے لیے بے جگری سے لڑ رہی ہیں۔


ڈاکٹر ثانیہ نشتر

‏مراضِ قلب کی مشہور ماہر ڈاکٹر ثانیہ نشتر پاکستان میں غربت کے خاتمے کے لیے وزیر اعظم کی خصوصی مشیر ہیں۔ وہ 2013ء میں بھی عبوری وفاقی کابینہ میں خدمات انجام دے چکی ہیں۔ عالمی ادارۂ صحت کی سربراہ کی حیثیت سے بھی نامزد ہو چکی ہیں۔ اس وقت ملک میں غربت کے خاتمے کے لیے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی بھی سربراہ ہیں۔


ثمینہ بیگ

وادئ شمشال سے تعلق رکھنے والی ثمینہ بیگ نے صرف 21 سال کی عمر میں دنیا کی بلند ترین ماؤنٹ ایورسٹ سر کر کے ملک گیر شہرت حاصل کی تھی۔ وہ صرف ماؤنٹ ایورسٹ ہی نہیں بلکہ دنیا کے ساتوں بر اعظموں کی بلند ترین چوٹیاں سر کرنے کا کارنامہ بھی انجام دے چکی ہیں۔ اِس سال وہ دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو سر کرنے کی کوشش کریں گی۔


طاہرہ قاضی

‏16 دسمبر 2014ء پاکستان کی تاریخ کے بھیانک ترین دنوں میں سے ایک ہے جب دہشت گردوں نے آرمی پبلک اسکول پشاور پر حملہ کر کے 150 سے زیادہ طلبہ اور اساتذہ کو شہید کر دیا تھا۔ انہی میں سے ایک اسکول کی پرنسپل طاہرہ قاضی بھی تھیں۔ جنہوں نے اپنی جان بچانے کے بجائے اپنے بچوں کی زندگی بچانا زیادہ بہتر سمجھا۔ وہ دہشت گردوں اور بچوں کے درمیان حائل ہو گئیں اور انہیں کہا کہ "مجھ سے بات کرو، میں ان کی ماں ہوں۔” میڈم طاہرہ قاضی کو سر میں گولی مارنے والوں کو تو کوئی نہیں جانتا، لیکن طاہرہ قاضی کا نام ہمیشہ زندہ رہے گا۔


بانو قدسیہ

سب کی بانو آپا، اردو کی مشہور ناول اور افسانہ نگار۔ انہوں نے راجا گدھ جیسا مشہور ناول لکھا جبکہ ٹیلی وژن کے لیے کئی ڈرامے بھی تحریر کیے۔ آپ معروف ناول نگار اشفاق احمد کی اہلیہ تھیں۔


پروین شاکر

اردو کی معروف شاعرہ کہ جنہوں نے اردو ادب کا نسوانی رُخ دیا۔ خود کلامی صد برگ، خود کلامی، انکار اور کفِ آئینہ جیسے شاہکار تخلیق کیے اور پھر دسمبر 1994ء میں صرف 42 سال کی عمر میں ایک حادثے میں چل بسیں۔


شرمین چنائے

شرمین عبید چنائے مشہور پاکستانی فلم ساز ہیں جو نے دو مرتبہ اکیڈمی اور چھ بار ایمی ایوارڈز جیسے مشہور عالمی اعزازات چیت چکی ہیں۔ آپ کا کیریئر تنازعات سے خالی نہیں ہے، لیکن انہوں نے خود پر ہونے والی ہر تنقید کا بہادری سے مقابلہ کیا اور اپنی فلموں کے ذریعے اب بھی کر رہی ہیں۔

مزید تحاریر

ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام بھی کہہ رہی ہے کہ گھر جاؤ، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر میاں حمزہ شہباز شریف کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا اب...

سندھ حکومت نے سعید غنی سے تعلیم کا قلمدان واپس لینے کا فیصلہ کرلیا

سندھ کی صوبائی حکومت میں وزیر تعلیم و لیبر سعید غنی سے محکمہ تعلیم کا قلمدان لینے کا فیصلہ کرلیا گیا، ساتھ ہی کابینہ...

ن لیگ کو چاہیے کہ پیپلز پارٹی جیسی سیاست کرے، فواد چودھری

وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن احتجاجی سیاست سے باہر آکر پیپلز پارٹی جیسی سیاست...

پیپلز پارٹی کو نوٹس مسلم لیگ ن نے نہیں، پی ڈی ایم نے بھیجا تھا، مریم نواز

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جس کے لیے کہا جاتا تھا کہ سیاست ختم ہوگئی اس...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے