27.7 C
Islamabad
بدھ, مئی 19, 2021

اگر ووٹرز کو ووٹ ضائع کرنا ہوتا وہ دونوں امیدواروں کو ووٹ ڈالتے، سعید غنی

تازہ ترین

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...
- Advertisement -

وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ اگر ووٹر کو ووٹ مسترد کرانا ہوتا تو وہ بیلٹ پیپرکو خالی چھوڑ آتا، میں مطالبہ کرتا ہوں سیکرٹری سینیٹ کو برطرف کرکے جیل میں ڈالا جائے، سیکرٹری سینیٹ نام بتائے کس نے کیمرے لگائے۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سیکرٹری سینیٹ کو برطرف کرکے جیل میں ڈالا جانا چاہیے۔ سیکرٹری سینیٹ نے ووٹرز اور امیدوار کو گمراہ کیا ہے، ہمیں یقین تھا کہ یہ کیمرے کے بعد کوئی حربہ استعمال کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمارے ووٹرز نے دیانتداری سے پارٹی ہدایت کے مطابق ووٹ دیا ہے، ہمارے ووٹرز نے جان بوجھ کر ووٹ خراب نہیں کیے، اگر ووٹرز کو ووٹ ضائع کرنا ہوتا وہ دونوں امیدواروں کو ووٹ ڈالتے۔

سعید غنی نے کہا کہ ہمارے 7 ووٹ درست تھے جن کو مسترد کیا گیا، چیئرمین سینیٹ کا انتخاب، ووٹ مسترد ہونے پر عدالت سے رجوع کریں گے۔ شبلی فراز نے کہا تھا کہ سینیٹ انتخابات جیتنے کے لیے ہر حربے استعمال کریں گے، ان کا لہجہ بتارہا تھا کہ حکومت ہر حال میں سینیٹ انتخابات جیتنا چاہتی ہے۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ مصطفی نواز کھوکھر اور مصدق ملک نے پولنگ بوتھ سے خفیہ کیمرے پکڑے، کیمرے کے منصوبہ سے حکومت نے اپنے ووٹرز کو خوفزدہ کیا۔ کیمرے کا ڈرامہ پکڑنے پر حکومت نے کہا کہ یہ حزب اختلاف نے لگائے تھے، اگر ہم نے لگائے تو سیکرٹری سینیٹ کو برطرف کرو۔ انہوں نے کہا کہ فاروق ایچ نائیک نے سیکرٹری سینیٹ سے رابطہ کیا، فاروق ایچ نائیک، علی قاسم گیلانی اور میں سیکرٹری سینیٹ کے پاس گئے۔

رہنما پیپلز پارٹی نے کہا کہ رات کے اندھیرے میں کیمرے لگ سکتے ہیں تو بیلیٹ پیپر میں بھی گڑبڑ ہوسکتی ہے۔ ہم نے سیکرٹری سینیٹ سے کہا کہ بیلیٹ پیپر پر کوئی اور نشان نہیں ہونا چاہیے، ایک ممبر نے شیری رحمٰن سے کہا کہ نام پر مہر لگا دی ہے، یہ ٹھیک ہے۔ شیری رحمٰن نے سیکرٹری سینیٹ سے پوچھا تو انہوں نے کہا نام پر مہر لگانا ٹھیک ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پریذائڈنگ افسر مظفر شاہ صاحب کا لہجہ رعونت والا تھا، مظفر شاہ کو فون کے علاوہ بھی بہت کچھ آیا ہوگا، فون پر اتنی تابعداری نہیں ہوسکتی۔ مظفر شاہ نے بددیانتی پر مبنی رولنگ دی ہے، غیر قانونی رولنگ دی ہے، مظفر شاہ نے ہارے ہوئے صادق سنجرانی کو زبردستی کامیاب قرار دیا۔

مزید تحاریر

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے