27.7 C
Islamabad
بدھ, مئی 19, 2021

یوسف رضا گیلانی کو الیکٹ نہیں سلیکٹ کیا گیا، مریم نواز

تازہ ترین

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...
- Advertisement -

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ اگر آپ نے تابعداری کرنی ہے اور سلیکٹ ہونا ہے تو آپ کو وزیراعظم عمران خان کی پیروی کرنی چاہیے، اب صف بندی ہو گئی ہے اور لکیر کھینچی جاچکی ہے۔

لاہور ہائی کورٹ میں ضمانتی مچلکے جمع کرانے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چھوٹے سے عہدے کے لیے جمہوری جدوجہد کو بڑا نقصان پہنچایا گیا۔ قائد حزب اختلاف سینیٹ یوسف رضا گیلانی کو الیکٹ نہیں سلیکٹ کیا گیا۔ اگر آپ نے تابعداری کرنی ہے تو پھر وزیراعظم عمران خان کی پیروی کرلیں جو بے نقاب ہوکر بہت ڈھٹائی سے تابعداری کرتا ہے اور باپ کے احکامات مانتا ہے۔

مریم نواز نے کہا کہ اگر چیئرمین سینیٹ کے لیے ووٹ دے سکتے ہیں تو حزب اختلاف کے لیے کیوں نہیں؟ اصولوں پر چلنا اور قائم رہنا بڑی بات ہوتی ہے، آدھا تیتر اور آدھا بٹیر، کبھی یہ نہیں ہوسکتا۔ انہوں نے کہا کہ آپ شاید اپنے آپ کو دھوکہ دے رہے ہو، عوام کو آپ دھوکہ نہیں دے سکتے۔ اگر پیپلز پارٹی سینیٹ میں قائد حزب اختلاف کا عہدہ چاہیے تھا تو نواز شریف سے بات کرلیتے۔

لیگی نائب صدر کا کہنا تھا کہ ہمارے امیدوار کو صادق سنجرانی نے 5،6 دن پہلے فون کیا اور کہا اگر آپ کو ضرورت ہو تو میں نے بی ای پی پارٹی کے 3،4 ووٹ رکھے ہیں، آپ کو دے دوں گا۔ لیگی امیدوار نے کہا کہ مجھے آپ کے ووٹ کی ضرورت نہیں ہے، میری جماعت کا ایک مؤقف ہے میں اس پہ قائم ہوں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لیے ن لیگ اور پی ڈی ایم میں شامل جماعتیں ہی کافی ہیں۔ ظاہر ہے عوام کی طاقت جن کے ساتھ ہو وہ جمہوری جدوجہد کا راستے اختیار کرتے ہیں وہ ڈیل کرکے سلیکٹ نہیں ہوتے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمن کا مؤقف بھی جلد سامنے آجائے گا۔

نواز شریف کی صاحبزادی نے کہا کہ عوام ایک ایک چیز دیکھ رہی ہے اور وہ دیکھ رہے ہیں کہ کون کہاں کھڑا ہے اور کون جدوجہد کررہا ہے۔ ایک طرف لوگ آئین و قانون کی خاطر جدوجہد کر رہے ہیں دوسری طرف لوگ چھوٹے چھوٹے فائدے کے لیے بیانیے کو روند کر نکل  جاتے ہیں۔ سینیٹ میں قائد حزب اختلاف کے چناؤ پر مسلم لیگ ن کو شکست نہیں ہوئی بلکہ ان کو شکست ہوئی ہے جنہوں نے جمہوریت کے لیے قربانیاں دیں۔

پیپلز پارٹی سے مخاطب ہوکر ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر نواز شریف سینیٹ انتخابات میں آپ کو ووٹ دے سکتے ہیں تو قائد حزب اختلاف کا عہدہ بھی آپ کو دے سکتے تھے، ایک بار بات تو کرلیتے مگر  آپ نے اس باپ سے مدد مانگی جو اپنے باپ کے بغیر کسی کے باپ کا ساتھ بھی نہیں دیتا۔

مزید تحاریر

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے