22.2 C
Islamabad
منگل, اپریل 13, 2021

ٹوکیو اولمپکس، شمالی کوریا نے شرکت سے انکار کر دیا

تازہ ترین

ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام بھی کہہ رہی ہے کہ گھر جاؤ، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر میاں حمزہ شہباز شریف کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا اب...

سندھ حکومت نے سعید غنی سے تعلیم کا قلمدان واپس لینے کا فیصلہ کرلیا

سندھ کی صوبائی حکومت میں وزیر تعلیم و لیبر سعید غنی سے محکمہ تعلیم کا قلمدان لینے کا فیصلہ کرلیا گیا، ساتھ ہی کابینہ...

ن لیگ کو چاہیے کہ پیپلز پارٹی جیسی سیاست کرے، فواد چودھری

وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن احتجاجی سیاست سے باہر آکر پیپلز پارٹی جیسی سیاست...

پیپلز پارٹی کو نوٹس مسلم لیگ ن نے نہیں، پی ڈی ایم نے بھیجا تھا، مریم نواز

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جس کے لیے کہا جاتا تھا کہ سیاست ختم ہوگئی اس...
- Advertisement -

شمالی کوریا نے آئندہ اولمپکس میں شرکت نہ کرنے کا اعلان کر دیا، یوں وہ پہلا ملک بن گیا ہے کہ جس نے کرونا وائرس کے خوف کی وجہ سے ٹوکیو میں ہونے والے اولمپکس سے نام واپس لے لیا ہے۔ یہ فیصلہ ظاہر کرتا ہے کہ جاپان میں ہونے والے دنیا کے سب سے بڑے کھیلوں کے ایونٹ کو ان وبائی حالات میں کتنے بڑے چیلنجز کا سامنا ہے۔

شمالی کوریا کی وزارتِ کھیل نے اپنی ویب سائٹ پر جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ اس کی اولمپک کمیٹی نے یہ فیصلہ 25 مارچ کو ہونے والے ایک اجلاس میں ہی کر لیا تھا، کہ وہ کووِڈ-19 سے درپیش صحت کے عالمی بحران سے محفوظ رہنے کے لیے اپنے کھلاڑیوں کو اولمپکس میں نہیں بھیجے گا۔ البتہ اس کا اعلان اب کیا گیا ہے۔

کرونا وائرس کی وجہ سے ٹوکیو گیمز پہلے ہی مؤخر ہو چکے ہیں، جو 2020ء میں کھیلے جانے تھے لیکن اب رواں سال جولائی-اگست میں منعقد ہوں گے۔ اس کے لیے کئی حفاظتی اقدامات اٹھائے گئے ہیں جن میں بین الاقوامی تماشائیوں کی آمد پر پابندی اور کھلاڑیوں اور مقامی آبادی کو محفوظ رکھنے کے لیے اٹھائے گئے اقدامات بھی شامل ہیں۔ لیکن پھر بھی خدشات ہیں کہ اولمپکس وائرس کے پھیلاؤ کو مزید بڑھا سکتے ہیں اور جاپان میں مرض کے بڑھتے ہوئے قدم اور ویکسینیشن کے سُست عمل نے مزید سوالات کھڑے کر دیے ہیں۔

منگل کو جاپان کی اولمپک کمیٹی نے کہا کہ شمالی کوریا نے ابھی تک اسے باضابطہ طور پر مطلع نہیں کیا کہ وہ گیمز میں شرکت نہیں کرے گا۔

دوسری جانب جنوبی کوریا نے شمالی کوریا کے فیصلے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ ہمیں امید تھی کہ ٹوکیو اولمپکس دونوں کوریاؤں کے مابین تعلقات کو بہتر بنانے کا موقع فراہم کریں گے۔

شمالی کوریا نے 2018ء میں جنوبی کوریا میں ہونے والے سرمائی اولمپکس کے لیے 22 کھلاڑیوں کا دستہ بھیجا تھا جن کے ہمراہ سرکاری عہدیدار، اداکار، صحافی اور 230 تماشائیوں پر مشتمل گروپ بھی تھا۔ جنوبی کوریا کے شہر پیونگ چانگ میں ہونے والے ان سرمائی اولمپکس میں شمالی و جنوبی کوریا کے کھلاڑیوں نے ایک پرچم تلے مارچ کیا کہ جس پر متحدہ جزیرہ نما کوریا کا نقشہ بنا ہوا تھا۔ دونوں کوریاؤں نے ویمنز آئس ہاکی میں پہلی بار مشترکہ اولمپک ٹیم میدان میں اتاری، جو ویسے تو اپنے تمام میچز ہار گئی لیکن اسے بہت سراہا گیا۔

ان سرمائی اولمپکس کا سیاسی رُخ بھی تھا کیونکہ شمالی کوریا کے وفد میں ان کے رہنما کم جونگ اُن کی بااثر بہن بھی شامل تھیں جنہون نے جنوبی کوریا کے صدر مون جائی-اِن سے ملاقات کی۔

لیکن اس کے بعد سے دونوں ممالک کے مابین سفارتی کوششیں جمود کا شکار ہیں اور شمالی کوریا کی جانب سے اب ٹوکیو اولمپکس میں شرکت نہ کرنے کے اعلان سے ان امیدوں کو ایک دھچکا پہنچا ہے۔

گو کہ شمالی کوریا اب تک کرونا وائرس سے پاک ہونے کا دعویٰ کرتا آیا ہے، لیکن بظاہر ممکن نہیں لگتا کہ کوئی ملک اس وبا سے بچا ہوا ہو۔ شمالی کوریا نے وائرس کے خلاف اپنی کوششوں کو "قومی بقا کا معاملہ” قرار دیا تھا اور ملکی سرحدیں سیاحوں کے لیے بند کر دی تھیں اور سفارت کاروں کو بھی وطن واپس بھیجا گیا۔

مزید تحاریر

ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام بھی کہہ رہی ہے کہ گھر جاؤ، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر میاں حمزہ شہباز شریف کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا اب...

سندھ حکومت نے سعید غنی سے تعلیم کا قلمدان واپس لینے کا فیصلہ کرلیا

سندھ کی صوبائی حکومت میں وزیر تعلیم و لیبر سعید غنی سے محکمہ تعلیم کا قلمدان لینے کا فیصلہ کرلیا گیا، ساتھ ہی کابینہ...

ن لیگ کو چاہیے کہ پیپلز پارٹی جیسی سیاست کرے، فواد چودھری

وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن احتجاجی سیاست سے باہر آکر پیپلز پارٹی جیسی سیاست...

پیپلز پارٹی کو نوٹس مسلم لیگ ن نے نہیں، پی ڈی ایم نے بھیجا تھا، مریم نواز

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جس کے لیے کہا جاتا تھا کہ سیاست ختم ہوگئی اس...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے