22.2 C
Islamabad
منگل, اپریل 13, 2021

میری ذمہ داری احتساب کی نہ ہوتی تو میں بھی جہانگیر ترین کے ساتھ جاتا، شہزاد اکبر

تازہ ترین

ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام بھی کہہ رہی ہے کہ گھر جاؤ، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر میاں حمزہ شہباز شریف کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا اب...

سندھ حکومت نے سعید غنی سے تعلیم کا قلمدان واپس لینے کا فیصلہ کرلیا

سندھ کی صوبائی حکومت میں وزیر تعلیم و لیبر سعید غنی سے محکمہ تعلیم کا قلمدان لینے کا فیصلہ کرلیا گیا، ساتھ ہی کابینہ...

ن لیگ کو چاہیے کہ پیپلز پارٹی جیسی سیاست کرے، فواد چودھری

وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن احتجاجی سیاست سے باہر آکر پیپلز پارٹی جیسی سیاست...

پیپلز پارٹی کو نوٹس مسلم لیگ ن نے نہیں، پی ڈی ایم نے بھیجا تھا، مریم نواز

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جس کے لیے کہا جاتا تھا کہ سیاست ختم ہوگئی اس...
- Advertisement -

وزیراعظم کے مشیر داخلہ و احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ یہ نہیں ہوسکتا کہ احتساب اور قانون کی بالادستی کا نعرہ لگا کر دوسروں کو پکڑیں اور اپنوں کو چھوڑ دیں، جہانگیر ترین سے ذاتی طور پر میرا کوئی مسئلہ نہیں، میرا رول بہت مشکل ہے، اس میں دوست بھی کھو جاتے ہیں۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ چینی کی قیمت مقرر کر دی گئی ہے، پہلی دفعہ ہوا ہے کہ حکومت نے چینی کی ایکس مل قیمت مقرر کی۔ چار پانچ دہائیوں سے چینی کی قیمت کا تعین نہیں کیا گیا، رمضان میں اشیائے ضروریات کی قیمتیں کم ہونی چاہئیں لیکن بڑھ جاتی ہیں۔ پی ٹی آئی ارکان کے جہانگیر ترین کے ساتھ عدالت جانے پر شہزاد اکبر نے کہا کہ میری ذمہ داری احتساب کی نہ ہوتی تو شاید میں بھی ساتھ چلا جاتا، ساتھ جانے کا مقصد گروپ بنانا نہیں۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ سب سے مشکل اپنے کسی سے سوال کرنا ہوتا ہے، لیکن یہ بڑا ضروری ہے، آپ کا نعرہ رول آف لاء کا ہے تو اپنوں کا بھی احتساب ضروری ہے۔ شوگر کمیشن کی مئی 2020 میں رپورٹ آئی، شوگر کمیشن کی رپورٹ سامنے رکھ کر کابینہ نے اقدامات کیے، رپورٹ کی روشنی میں اینٹی کرپشن اور نیب کو چیزیں بھجوائی گئیں۔

مشیر داخلہ کا کہنا تھا کہ تحریکِ انصاف میں کھل کر بات ہوتی ہے، پھر اجتماعی فیصلہ ہوتا ہے، اندازے لگائے جارہے ہیں کہ جہانگیر ترین شاید میرے اور پرنسپل سیکریٹری سے متعلق بات کر رہے ہیں۔ جہانگیر ترین سے ذاتی طور پر میرا کوئی مسئلہ نہیں، وہ کامیاب بزنس مین ہیں، میرا رول بہت مشکل ہے، اس میں دوست بھی کھو جاتے ہیں۔ کسی ایک گروہ یا شخص کے خلاف کارروائی نہیں کی جارہی،

شہزاد اکبر نے کہا کہ جن جن لوگوں نے چینی میں پیسہ کھایا ان سے واپس لیں گے، ای سی ایل میں کسی چینی مل مالک کا نام نہیں ڈالا گیا۔ ایف آئی اے کو کچھ کیس اور کچھ انکوائریاں بھیجی گئی ہیں، عدالت سے اجازت لے کر شہاز شریف سے جیل میں جواب لیے گئے۔ حمزہ شہباز سے بھی سوالات پوچھے گئے، اسی طرح جے ڈبلیو ڈی کو سوال نامہ بھیجا گیا، کسی ایک کو ٹارگٹ نہیں کیا گیا۔

شہزاد اکبر کا مزید کہنا تھا کہ یہ سب کے حق میں ہے کہ ایکس مل قیمت مقرر ہو جائے، اس کے بعد آپ کو ایف بی آر یا کوئی محکمہ تنگ نہیں کرے گا۔ آپ کانعرہ احتساب کا ہے تو پھر یہ نہیں ہوسکتا کہ آپ صرف دوسروں کا احتساب کریں۔ کسی ایک گروپ کا نہیں سب کا احتساب جاری ہے، 20 فیصد کا احتساب نہ کرتے تو چینی کے مسئلے کا حل نہ نکال پاتے۔

مزید تحاریر

ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام بھی کہہ رہی ہے کہ گھر جاؤ، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر میاں حمزہ شہباز شریف کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا اب...

سندھ حکومت نے سعید غنی سے تعلیم کا قلمدان واپس لینے کا فیصلہ کرلیا

سندھ کی صوبائی حکومت میں وزیر تعلیم و لیبر سعید غنی سے محکمہ تعلیم کا قلمدان لینے کا فیصلہ کرلیا گیا، ساتھ ہی کابینہ...

ن لیگ کو چاہیے کہ پیپلز پارٹی جیسی سیاست کرے، فواد چودھری

وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن احتجاجی سیاست سے باہر آکر پیپلز پارٹی جیسی سیاست...

پیپلز پارٹی کو نوٹس مسلم لیگ ن نے نہیں، پی ڈی ایم نے بھیجا تھا، مریم نواز

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جس کے لیے کہا جاتا تھا کہ سیاست ختم ہوگئی اس...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے