27.7 C
Islamabad
بدھ, مئی 19, 2021

ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام بھی کہہ رہی ہے کہ گھر جاؤ، حمزہ شہباز

تازہ ترین

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...
- Advertisement -

پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر میاں حمزہ شہباز شریف کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا اب کوئی جواز نہیں، اس حکومت کے گھر جانے کے دن قریب ہیں، ڈسکہ انتخاب کے بعد عوام کی طرف سے بھی ایک واضح پیغام ہے کے کہ گھر جاؤ۔

قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی نے ڈسکہ انتخاب کے حوالے سے بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ اللہ تعالی نے ن لیگ کو شاندار کامیابی سے نوازا ہے، یہ انتخاب وزیر اعظم عمران خان کی حکومت کے خلاف ریفرنڈم ثابت ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈسکہ کی عوام کو سلام ہے جنہوں نے بہادری کے ساتھ اپنے حقِ رائے دہی کا دفاع کیا۔ مہنگائی، بے روزگاری اور غربت سے تنگ عوام نے اپنا فیصلہ دے دیا ہے اور حکمرانوں کے پاس اقتدار میں رہنے کا کوئی جواز نہیں۔

حمزہ شہباز نے کہا کہ حکومتی جماعت تحریک انصاف کا تمام ضمنی انتخابات ہار جانا عوام کی طرف سے ایک واضح پیغام ہے کے گھر جاؤ۔ انہوں نے بتایا کہ میں نے لیگی رہنما نوشین افتخار کو فون پر مبارکباد دی ہے، تمام تنظیمی عہدیداروں اور کارکنوں کو بھی سلام پیش کرتا ہوں۔ اس حکومت کے گھر جانے کے دن قریب ہیں، ان کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف ہر فورم پر لڑیں گے۔

واضح رہے کہ این اے 75 ڈسکہ میں ہونے والے انتخاب کے نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن نے برسر اقتدار جماعت پاکستان تحریک انصاف کے خلاف واضح برتری حاصل کی تھی۔ مسلم لیگ ن کی جانب سے نوشین افتخار جبکہ پی ٹی آئی کی طرف سے علی اسجد ملہی کا نام بطور امیدوار سامنے لایا گایا تھا۔

اس موقع پر تحریک لبیک پاکستان کے امیدوار محمد خلیل 8268 ووٹ لے کر تیسرے نمبر پر جبکہ پی ٹی آئی کے اسجد ملہی 93433 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ لیگی امیدوار نوشین افتخار نے 110،075  ووٹ لے کر انتخابی معرکہ اپنے نام کیا۔

مزید تحاریر

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے