27.7 C
Islamabad
بدھ, مئی 19, 2021

کئی کھلاڑی کووِڈ کے شکار، آئی پی ایل کھٹائی میں پڑ گئی

تازہ ترین

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...
- Advertisement -

انڈین پریمیئر لیگ میں چند کھلاڑیوں کو کرونا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد ایک مقابلہ ملتوی کر دیا گیا ہے۔

یہ پیر کو ہونے والا کلکتہ نائٹ رائیڈرز اور رائل چیلنجرز بنگلور کا مقابلہ تھا کہ جس سے پہلے کلکتہ کے دو کھلاڑی ورون چکر ورتی اور سندیپ واریئر کے کووِڈ-19 سے متاثر ہونے کی اطلاع آ گئی تھی۔ جس کے بعد احمد آباد میں طے شدہ یہ میچ ملتوی ہو گیا ہے۔

یہ واقعہ عین اس وقت پیش آیا ہے جب بھارت میں کرونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کی وجہ سے کئی حلقے آئی پی ایل کے انعقاد پر معترض ہیں اور اس کو ملتوی کرنے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔ بھارت میں وبائی صورت حال کی وجہ سے آئی پی ایل ہی نہیں بلکہ اکتوبر و نومبر میں طے شدہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے انعقاد پر بھی سوالات کھڑے ہو گئے ہیں۔

بہرحال، چکرورتی اور واریئر نے خود کو باقی اسکواڈ سے علیحدہ کر لیا ہے اور انتظامیہ کے مطابق باقی تمام کھلاڑیوں کے ٹیسٹ منفی آئے ہیں۔

اس خبر کے کچھ ہی دیر بعد چنئی سپر کنگز کے دستے کے چند اراکین کے ٹیسٹ مثبت آنے کا بھی پتہ چلا۔ ان میں چیف ایگزیکٹو آفیسر کاشی وشوناتھ اور باؤلنگ کوچ لکشمی پتھی بالاجی بھی شامل ہیں۔

آئی پی ایل کے لیے ٹورنامنٹ کے آغاز سے پہلے تمام آٹھوں ٹیموں کے لیے ایک ‘بایو-سکیور ببل’ بنایا گیا تھا کیونکہ ملک میں وبا بُری طرح پھیل رہی تھی۔ گزشتہ 12 دنوں میں ہر روز کم از کم 3 لاکھ نئے مریض سامنے آئے ہیں اور روزانہ 3 سے 4 ہزار اموات ہو رہی ہیں۔ ملک کے کئی علاقوں میں تو ہسپتالوں میں بستروں اور آکسیجن کی شدید قلت تک پیدا ہو گئی ہیں۔

اب تک آئی پی ایل کے تمام میچز تماشائیوں کے بغیر ہو رہے ہیں لیکن گزشتہ ہفتے آسٹریلیا کے تین کھلاڑیوں کے وطن واپس چلے جانے کے بعد انتظامیہ کی کوشش ہے کہ باقی غیر ملکی کھلاڑیوں کی موجودگی کو یقینی بنایا جائے۔ اس صورت حال میں آج نئے کیسز کا سامنے آنا تشویش ناک ہے۔

آسٹریلیا کے کھلاڑی ایڈم زیمپا، اینڈریو ٹائی اور کین رچرڈسن گزشتہ ہفتے وطن واپس لوٹ گئے تھے۔

ایک طرف جہاں سنگین بحرانی حالت میں ٹورنامنٹ جاری رکھنے پر سوالات اٹھ رہے ہیں تو دوسری جانب بھارتی کرکٹ حکام کا کہنا ہے کہ اگر اسے ملتوی کیا جاتا ہے تو کروڑوں ڈالرز کا نقصان ہو سکتا ہے۔

یاد رہے کہ 9 اپریل کو لیگ کے آغاز سے پہلے بھی آسٹریلیا کے آل راؤنڈر ڈینیل سیمس اور دہلی کے اسپنر آکشر پٹیل کے ٹیسٹ مثبت آئے تھے۔

مزید تحاریر

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے