27.7 C
Islamabad
بدھ, مئی 19, 2021

مصر فرانس سے 30 رافال لڑاکا طیارے خریدے گا

تازہ ترین

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...
- Advertisement -

مصر نے فرانس سے 30 رافال لڑاکا طیارے خریدنے کا معاہدہ کیا ہے جو تقریباً 4.5 ارب ڈالرز کے ہوں گے۔ اس معاہدے کا انکشاف مصر کی وزارتِ دفاع نے کیا ہے۔

فرانسیسی صدر ایمانوئیل ماکرون نے دسمبر میں کہا تھا کہ وہ انسانی حقوق کا احترام کرنے کی شرط لگا کر مصر کو ہتھیاروں کی فروخت نہیں روکیں گے کیونکہ اس سے خطے میں تشدد کے خاتمے کی قاہرہ کی صلاحیت کمزور پڑ جائے گی۔

مصر کی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ اس معاہدے کے تحت ادائیگی کم از کم 10 سال کے عرصے میں کی جائے گی البتہ اس نے معاہدے کی کُل مالیت اور دیگر تفصیلات ظاہر نہیں کیں۔

البتہ ذرائع نے خفیہ دستاویزات کے حوالے سے کہا ہے کہ یہ معاہدہ اپریل کے اختتامی دنوں میں ہوا اور اس کی تصدیق منگل کو ہوئی جب مصری وفد پیرس پہنچا۔

یہ معاہدہ رافال طیارے بنانے والی کمپنی داسو (Dassault) کی ایک اور کامیابی ہوگی جس نے ابھی جنوری میں ہی یونان کے ساتھ 18 رافال طیارے بیچنے کا معاہدہ کیا تھا۔ قطر اور بھارت پہلے ہی فرانس کے ساتھ معاہدے کر چکے ہیں جو فرانس کی دفاعی صنعت کی کامیابی کی مثال بن چکے ہیں۔

مصری معاہدے میں مبینہ طور پر مزید 241 ملین ڈالرز کے میزائل اور دیگر متعلقہ ساز و سامان بھی شامل ہوں گے۔

فرانس 2013ء سے 2017ء کے دوران مصر کو ہتھیار فراہم کرنے والا اہم ترین ملک تھا، جس میں 24 جنگی جہازوں کی فروخت بھی شامل تھی۔ لیکن اس کے بعد معاملات ٹھنڈے پڑتے دکھائی دیے کیونکہ رافال اور دوسرے جنگی جہازوں کی خریداری پر بات چل رہی تھی۔ سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ اصل مسئلہ مصر کی قرضوں کی ادائیگی کی صلاحیت پر شک تھا، مصر میں انسانی حقوق کی صورت حال پر تشویش نہیں۔

ہیومن رائٹس واچ کے ڈائریکٹر برائے فرانس بینیڈکٹ ژانرو نے اس معاہدے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ "مصری حکومت کے ساتھ ہتھیاروں کی فروخت کا اتنا بڑا معاہدہ کرنا جبکہ وہاں گزشتہ دہائیوں کا بدترین جبر و تشدد کیا جا رہا ہے، ملک میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں ہو رہی ہیں اور دہشت گردی کے خلاف جدوجہد کے نام پر انسانی حقوق پامال کیے جا رہے ہیں، یہ قدم اٹھا کر دراصل فرانس جبر و استبداد کا ساتھ دے رہا ہے۔”

فرانس عبد الفتاح سیسی کے زیرِ اقتدار مصر کے ساتھ گہرے تعلقات کا لطف اٹھا رہا ہے کیونکہ اس کے اور مصر کر مشرق وسطیٰ میں مفادات یکساں ہیں اور دونوں ترک صرف رجب طیب ارطوغان کی دشمنی میں بھی ایک ساتھ ہیں۔

گزشتہ سال دسمبر میں جب سیسی نے فرانس کا دورہ کیا تھا تو انہیں فرانس کے اعلیٰ ترین شہری اعزاز سے نوازا گیا تھا۔ تب انسانی حقوق کے کارکنوں نے کہا تھا کہ سیسی کے لیے سرخ قالین اس وقت بچھایا گیا ہے، جب مصر کی جیلوں میں تقریباً 60 ہزار قیدی سڑ رہے ہیں۔

واضح رہے کہ مصر نے یہ مہنگے ترین لڑاکا طیارے خریدنے کا فیصلہ اس وقت کیا ہے جب اس پر 125 ارب ڈالرز کا بیرونی قرضہ چڑھا ہوا ہے اور اگر داخلی قرضے کو بھی ملا لیا جائے تو یہ 430 ارب ڈالرز سے بھی تجاوز کر جاتا ہے۔

مزید تحاریر

تین سال بعد ژوب کے لیے پروازوں کا آغاز

تقریباً تین سال بعد پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز نے کراچی اور ژوب کے درمیان پروازوں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے کی پہلی پرواز...

کرونا وائرس کے بعد سمندری طوفان بھی بھارت پہنچ گیا، 24 ہلاک، 100 لاپتہ

بحیرۂ عرب میں سمندری طوفان سے بھارت کے مغربی ساحل پر کم از کم 24 افراد ہلاک اور 100 لاپتہ ہو چکے ہیں۔ ایک ایسے...

مقبوضہ کشمیر، کرونا ویکسین کے حوالے سے بھی امتیازی سلوک کا شکار

‏82 سالہ امینہ بانو بڈگام کے ایک سرکاری ہسپتال کے ویکسینیشن روم میں موجود ہیں تاکہ کووِڈ-19 کی ویکسین کا پہلا ٹیکا لگوا سکیں...

گوانتانامو کے معمر ترین پاکستانی قیدی کی رہائی کا امکان روشن ہو گیا

پاکستان سے تعلق رکھنے والے 73 سالہ سیف اللہ پراچہ بدنامِ زمانہ گوانتانامو قید خانے کے سب سے عمر رسیدہ قیدی ہیں۔ بالآخر 16...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے