36 C
Islamabad
جمعہ, جون 18, 2021

کینیڈا میں اسلاموفوبیا کا نشانہ بننے والے پاکستانی خاندان کا مختصر تعارف

تازہ ترین

پی ٹی آئی دور میں گھوڑوں کے بجائے گدھوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ خبردار! اگر کسی نے نالائق حکومت کے لیے ریاست مدینہ کا لفظ...

اسلام آباد میں خواتین کے لیے الگ بازار بنانے جا رہے ہیں، شیخ رشید

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ منشیات اور آئس کے ڈیلرز کو فور طور پر ختم کیا جائے، اسلام آباد...

پیٹرول کے بعد سی این جی کی قیمتوں میں بھی فی کلو 9 روپے اضافے کا امکان

آئندہ ماہ کمپریسڈ نیچرل گیس (سی این جی) کی قیمتوں میں 9 روپے فی کلو تک اضافے کا امکان، سی این جی کی موجودہ...

پی ٹی آئی حکومت کی کامیابی کا پیمانہ کیا ہو؟ – جمال عبداللہ عثمان

پیمانہ کیا ہو کہ پاکستان تحریک انصاف نے سابق تمام حکومتوں سے بہت اچھا پرفارم کیا ہے۔ یا پھر پیمانہ کیا ہو، جس سے پتا...
- Advertisement -

وہ 2007ء میں ایک نئی زندگی کے آغاز کے لیے کینیڈا سے پاکستان آئے تھے۔ 46 سالہ سلمان افضال، اُن کی 44 سالہ اہلیہ مدیحہ سلمان، 15 سالہ بیٹی یمنیٰ افضال اور والدہ 74 سالہ طلعت افضال کا کینیڈا میں کوئی قریبی عزیز نہیں تھا اور حلیمہ خان کہتی ہیں کہ ان کا اس خاندان سے بہت قریبی تعلق قائم ہو گیا تھا۔

یہ چاروں افراد اتوار کو کینیڈا کے شہر لندن، اونٹاریو میں تب جاں بحق ہوئے، جب ایک نوجوان نے اپنی سیاہ رنگ کے ذریعے انہیں کچل دیا تھا۔ حکام کا کہنا ہے کہ اس نے یہ حرکت مسلمانوں سے نفرت کی وجہ سے کی اور اب اس پر قتل کے 4 اور اقدامِ قتل کا  ایک مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

حلیمہ خان بتاتی ہیں کہ ہم خوشی اور غمی میں ایک دوسرے کے ساتھی تھے۔ کینیڈا منتقلی کا سفر ان کے لیے آسان نہیں تھا لیکن انہوں نے بھرپور محنت سے ایسا ممکن کر دکھایا۔

جائے وقوعہ پر مرحومین کی یاد میں موجود افراد کے ساتھ کھڑی حلیمہ دو بچوں کی ماں ہیں۔ کہتی ہیں کہ افضال فیملی نے نہ صرف اپنے لیے دن رات محنت کی بلکہ مسلمانوں اور مقامی کمیونٹی کے لیے بھی سب کچھ کیا۔

خاندان کے ایک دوست احمد حجازی کہتے ہیں کہ کرونا وائرس کی آمد کے بعد سلمان افضال کے بچے ایسے تھے کہ جنہیں دیکھ کر دل چاہتا تھا کہ آپ کے بچے ایسے بچوں سے دوستی کریں۔ لاک ڈاؤن کے بعد انہوں نے اپنے معمولات میں کچھ تبدیلیاں کی تھیں۔ جن میں مغرب سے پہلے چہل قدمی بھی شامل تھی۔ لیکن انہیں کیا معلوم تھا کہ یہ ان کی آخری واک ہوگی۔

مدیحہ سلمان

مدیحہ نے پاکستان سے انجینئرنگ میں انڈر گریجویٹ ڈگری لی تھی اور 174 افراد کی کلاس میں واحد خاتون تھیں۔ انہوں نے کینیڈا آنے کے بعد لندن، اونٹاریو کی ویسٹرن یونیورسٹی سے ماسٹرز کیا اور پی ایچ ڈی کی تکمیل پر کام کر رہی تھیں۔

ان کے ساتھ کام کرنے والے انہیں ایک بہترین اور محبت کرنے والی خاتون قرار دیتے ہیں۔ وہ مختلف جرائد میں مضامین بھی لکھتی تھیں اور اکثر ان کی تحاریر شائع ہوتی رہتی تھیں۔

مدیحہ کے والد حال ہی میں کووِڈ-19 سے انتقال کر گئے تھے۔

حلیمہ خان بتاتی ہیں کہ آخری ملاقات پر جو الفاظ مدیحہ نے کہے، وہ اب بھی کانوں میں گونج رہے ہیں کہ "مجھے اور میرے گھر والوں کو اپنی دعاؤں میں یاد رکھیے گا۔”

سلمان افضال

‏46 سالہ سلمان افضال فزیوتھراپسٹ تھے اور مختلف کیئر ہومز میں بزرگ شہریوں کو خدمات فراہم کرتے تھے۔ انہوں نے 1997ء میں جامعہ کراچی سے گریجویشن کیا تھا اور انگریزی، اردو اور پنجابی روانی سے بولتے تھے۔

مقامی افراد کے مطابق وہ ایک ہنستی مسکراتی اور مثبت شخصیت کے حامل تھے۔

احمد حجازی کے مطابق لندن کی مسجد کا ہر شخص سلمان اور ان کے خاندان کو جانتا تھا۔ "رمضان میں تو ہم ان کے گھر جاتے رہتے تھے۔ وہ بہت من موہنی شخصیت کے حامل تھے، ہمیشہ مسکراتے ہوئے ملتے، دوسروں کی مدد میں پیش پیش رہتے اور انتہائی خوش اخلاق تھے۔”

یمنیٰ افضال

سلمان اور مدیحہ کی 15 سالہ بیٹی یمنیٰ ایک مقامی اسکول میں نویں جماعت کی طالبہ تھی، جہاں اس نے لندن اسلامک اسکول میں تعلیم مکمل کرنے کے بعد چند ماہ قبل ہی داخلہ لیا تھا۔

حسن مصطفیٰ اس خاندان کو اچھی طرح جانتے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ یمنیٰ اور ان کی والدہ نے اسکول کی ایک دیوار پر بڑی سی فرش سے لے کر چھت تک پھیلی تصویر بنائی تھی، جس میں زمین اور دوسرے سیاروں کو دکھایا گیا تھا اور اوپر لکھا تھا "علم حاصل کریں، رہنمائی کریں اور دوسروں کو متاثر کریں۔”

اوک رِج اسکول نے یمنیٰ کے اعزاز میں ایک ‘گرین اینڈ پرپل ربن’ مہم چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ جامنی رنگ اس لیے کیونکہ یہ یمنیٰ کا پسندیدہ رنگ تھا اور سبز رنگ اسلاموفوبیا کے خلاف۔

اس واقعے میں خاندان ایک اور رکن بھی نشانہ بنا ہے۔ 9 سالہ فائز کہ جو اس وقت شدید زخمی حالت میں ہسپتال میں داخل ہے۔

مزید تحاریر

پی ٹی آئی دور میں گھوڑوں کے بجائے گدھوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ خبردار! اگر کسی نے نالائق حکومت کے لیے ریاست مدینہ کا لفظ...

اسلام آباد میں خواتین کے لیے الگ بازار بنانے جا رہے ہیں، شیخ رشید

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ منشیات اور آئس کے ڈیلرز کو فور طور پر ختم کیا جائے، اسلام آباد...

پیٹرول کے بعد سی این جی کی قیمتوں میں بھی فی کلو 9 روپے اضافے کا امکان

آئندہ ماہ کمپریسڈ نیچرل گیس (سی این جی) کی قیمتوں میں 9 روپے فی کلو تک اضافے کا امکان، سی این جی کی موجودہ...

پی ٹی آئی حکومت کی کامیابی کا پیمانہ کیا ہو؟ – جمال عبداللہ عثمان

پیمانہ کیا ہو کہ پاکستان تحریک انصاف نے سابق تمام حکومتوں سے بہت اچھا پرفارم کیا ہے۔ یا پھر پیمانہ کیا ہو، جس سے پتا...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے