36 C
Islamabad
جمعہ, جون 18, 2021

وزیراعظم کی قیادت میں معیشت کو کئی طوفانوں سے نکال کر ساحل تک لائے، وزیر خزانہ

تازہ ترین

پی ٹی آئی دور میں گھوڑوں کے بجائے گدھوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ خبردار! اگر کسی نے نالائق حکومت کے لیے ریاست مدینہ کا لفظ...

اسلام آباد میں خواتین کے لیے الگ بازار بنانے جا رہے ہیں، شیخ رشید

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ منشیات اور آئس کے ڈیلرز کو فور طور پر ختم کیا جائے، اسلام آباد...

پیٹرول کے بعد سی این جی کی قیمتوں میں بھی فی کلو 9 روپے اضافے کا امکان

آئندہ ماہ کمپریسڈ نیچرل گیس (سی این جی) کی قیمتوں میں 9 روپے فی کلو تک اضافے کا امکان، سی این جی کی موجودہ...

پی ٹی آئی حکومت کی کامیابی کا پیمانہ کیا ہو؟ – جمال عبداللہ عثمان

پیمانہ کیا ہو کہ پاکستان تحریک انصاف نے سابق تمام حکومتوں سے بہت اچھا پرفارم کیا ہے۔ یا پھر پیمانہ کیا ہو، جس سے پتا...
- Advertisement -

وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان تاریخ کا رخ موڑنا چاہتے ہیں، اس دفعہ معاشی ترقی کا ہدف 4.8 رکھا گیا ہے، بجٹ کا کل حجم 8 ہزار 487 ارب روپے ہوگا، ہمیں خراب معیشت ورثے میں ملی۔

مالی سال 22-2021 کا بجٹ پیش کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ہمارے اوپر بھاری گردشی قرضوں کا بوجھ تھا۔ ماضی میں بغیر سوچے سمجھے قرضے لیے گئے، ایسے موقع پر سب سے بڑا چیلنج دیوالیہ ہونے سے بچنا تھا۔ مشکل فیصلے کیے بغیر اس صورتحال سے نکلنا ممکن نہیں تھا۔ یہ اس تباہی کی داستان ہے جس کا ملبہ صاف کرنے اور تعمیر نو کی ذمہ داری ہم پر آن پڑی۔ شرح سود کم کرکے ریت کا گھر تعمیر کیا گیا، یہ سب ایسے ہے جیسے کوئی اخراجات تو کرے مگر بل ادا نہ کرے۔ ہم اگر ان کی ادائیگیاں نہ کرتے تو ملک دیوالیہ ہوجاتا۔

شوکت ترین نے کہا کہ ہماری حکومت نے 20 ارب ڈالر کے کرنٹ خسارے کو 2021 کو سرپلس میں تبدیل کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے ملک کو معاشی بحران سے نکالا ہے، ہماری حکومت مشکل فیصلے کرنے سے نہیں ہچکچاتی۔ استحکام سے معاشی نمو کی طرف گامزن ہوئے۔ حکومت میں آئے تو زرعی شعبے میں ٹڈی دل کے حملے کا سامنا کیا لیکن زراعت کے شعبے میں بھی تاریخی کامیابی حاصل ہوئی۔ احساس پروگرام کی نقد امداد میں اضافہ کیا گیا۔ معاشی ترقی ہر شعبے میں ریکارڈ کی گئی ہے، کپاس کے علاوہ تمام فصلوں کی پیداوار میں اضافہ ہوا۔ زراعت کے شعبے میں 9 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ احساس پروگرام کے لیے بجٹ میں 260 ارب روپے رکھے گئے ہیں جبکہ لنگر خانے کا نظام جاری رکھا جائے گا۔ تسلیم کرتے ہیں کہ مہنگائی کے باعث غریب افراد کی زندگی مثاتر ہوئی ہے۔ مقامی حکومت کے انتخابات کے لیے 5 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔ کورونا متاثرین سمیت کم آمدن والے افراد کی مدد کی، احساس پروگرام کے ذریعے پچھلے سال سے ماضی کے مقابلے میں 40 فیصد زیادہ افراد کی مدد کی جارہی ہے۔ اب تک 15 ملین گھرانوں کو مالی امداد فراہم کی گئی ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ بجٹ میں کراچی ٹرانسفارمیشن پلان کے لیے 739 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔ وفاقی حکومت کراچی ٹرانسفارمیشن لائن کے لیے 98 ارب روپے رکھے گی جبکہ سرکارہ اور نیی شعبے کی مدد سے 509 ارب روپے شامل ہوں گے۔

مزید تحاریر

پی ٹی آئی دور میں گھوڑوں کے بجائے گدھوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ خبردار! اگر کسی نے نالائق حکومت کے لیے ریاست مدینہ کا لفظ...

اسلام آباد میں خواتین کے لیے الگ بازار بنانے جا رہے ہیں، شیخ رشید

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ منشیات اور آئس کے ڈیلرز کو فور طور پر ختم کیا جائے، اسلام آباد...

پیٹرول کے بعد سی این جی کی قیمتوں میں بھی فی کلو 9 روپے اضافے کا امکان

آئندہ ماہ کمپریسڈ نیچرل گیس (سی این جی) کی قیمتوں میں 9 روپے فی کلو تک اضافے کا امکان، سی این جی کی موجودہ...

پی ٹی آئی حکومت کی کامیابی کا پیمانہ کیا ہو؟ – جمال عبداللہ عثمان

پیمانہ کیا ہو کہ پاکستان تحریک انصاف نے سابق تمام حکومتوں سے بہت اچھا پرفارم کیا ہے۔ یا پھر پیمانہ کیا ہو، جس سے پتا...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے