28.2 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

حکومت اور اپوزیشن کا غیر پارلیمانی رویہ قابل مذمت اور مایوس کن ہے، اسپیکر قومی اسمبلی

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ غیر پارلیمانی یا بد زبانی کرنے والے اراکین کو کل ایوان میں داخلے کی اجازت نہیں ملے گی۔

نجی ٹی وی چینل اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے قومی اسمبلی میں ہونے والی ہنگامی آرائی پر تحقیقات کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ جو کچھ اسمبلی میں ہوا اس کی مکمل تحقیقات کرائیں گے۔ حزب اختلاف اور حکومتی اراکین نے قومی اسمبلی میں ہنگامی آرائی کرکے ایک دوسرے کے خلاف نازیبا گفتگو کی۔ اسمبلی میں کھڑے ہوکر حزب اختلاف اور حکومتی رہنماؤں کی طرف سے ایسا رویہ اختیار کرنا قابل مذمت اور مایوس کن ہے۔

اس موقع پر پروگرام میں موجود وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی شبلی فراز نے کہا کہ اگر پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کی ماضی کی تاریخ دیکھی جائے تو پہلے یہ آپس میں گتھم گتھا ہوا کرتے تھے۔ اب انہوں نے ایک خاص کلچر کو فروغ دیا ہے، اب اسی کلچر کے تسلسل کو یہ آگے لارہے ہیں۔ اسمبلی میں جو کچھ ہوا وہ افسوس ناک ہے اور قابل مذمت ہے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ جب حزب اختلاف نے وفاقی بجٹ سنا ہی نہیں تو اس پر تنقید کیسے کی جاسکتی ہے؟ شوکت ترین کی جانب سے بجٹ پیش کیے جانے کے وقت بھی حزب اختلاف کا شور شرابہ اور نعرے بازی کا سلسلہ جاری رہا۔ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے ملک میں اخلاقیات کو تباہ کیا، کرپشن کو کوئی برا نہیں سمجھتا۔ گزشتہ حکومتوں کے دوران اچھے اور برے کا فرق ختم کر دیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ حزب اختلاف جماعتیں صرف اپنی ذاتی سیاست میں گم ہیں۔ بجٹ پیش کیے جانے کے دوران اپوزیشن جماعتوں کا رویہ سب نے دیکھا۔ بجٹ میں کوئی ایسی باتیں نہیں ہوتیں جن میں حزب اختلاف کے بارے میں کچھ بھی ایسا کہا جائے یا جس پر احتجاج شروع کردیا جائے۔ بجٹ تو ایک دستاویز ہے جسے توجہ کے ساتھ سننا چاہیئے۔

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے