25.7 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

مفت انٹر بینک فنڈز ٹرانسفر کے مزے ختم، اب فیس لگے گی

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے بینکوں اور سروسز فراہم کرنے والے دیگر اداروں کو ہائی ویلیو ٹرانزیکشنز پر کم از کم فیس چارج کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

‏2020ء کی پہلی سہ ماہی میں کووِڈ کی وبا سامنے آنے کے بعد اسٹیٹ بینک نے غیر معمولی صورتِ حال سے نمٹنے کے لیے چند اقدامات اٹھائے تھے اور تمام بینکوں کو صارفین کے لیے انٹر بینک فنڈز ٹرانسفر (IBFT) مفت کرنے کا حکم دیا تھا، چاہے وہ کتنی بھی بڑی ٹرانزیکشن کیوں نہ کریں۔

لیکن اب اسٹیٹ بینک کے نئے حکم نامے کے تحت بینکوں کو ماہانہ کم از کم 25,000 روپے فی اکاؤنٹ کی حد تک صارفین کو مفت فنڈز ٹرانسفر خدمات پیش کرنے کو کہا ہے۔ البتہ بینک اپنی حد کا انتخاب خود کر سکتے ہیں، جو اس سے زیادہ بھی ہو سکتی ہے۔ یوں انفرادی صارفین مفت ٹرانسفر کی ماہانہ حد تک تو ٹرانزیکشنز کر سکتے ہیں لیکن اس کے ختم ہوتے ہی ان کو ادائیگی کرنا پڑے گی۔

حکم نامے کے مطابق 25,000 روپے کی حد پار ہونے کے بعد بینک ٹرانزیکشن کے 0.1 فیصد یا 200 روپے سے زیادہ چارج نہیں کر سکتے۔ اس سے بینکوں اور ایسی ہی سروسز فراہم کرنے والے اداروں کو گزشتہ ایک، ڈیڑھ سال میں ہونے والے نقصان کے ازالے میں مدد ملے گی۔

ماہرین، اور عوام، اس حکم پر بہت مایوس ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ یہ فیصلہ cashless بینکنگ کی طرف بڑھنے کے بجائے الٹے قدم واپسی کے مترادف ہے۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ "اسٹیٹ بینک نے انٹر بینک فنڈز ٹرانسفر کے نرخوں پر نظر ثانی کی ہے اور یقینی بنایا ہے کہ بینکوں اور دیگر مالیاتی اداروں کی جانب سے مفت IBFT سروسز پائیدار بنیادوں پر فراہم کی جائیں۔”

مرکزی بینک کا کہنا ہے کہ نئی ہدایات بینکوں کی حوصلہ افزائی کریں گی کہ وہ اپنے صارفین کو مفت ڈجیٹل فنڈز ٹرانسفر سروسز فراہم کرتی رہیں تاکہ ملک میں ڈجیٹل ادائیگی کو فروغ ملے۔

بینکوں کو مزید ہدایت کی گئی ہے کہ ایک ہی بینک میں ہونے والے تمام ڈجیٹل فنڈز ٹرانسفر (انٹرا بینک ٹرانسفر) بدستور مفت رہیں گے۔ اور ساتھ ہی یہ بھی کہا گیا ہے کہ بینک صارفین کو ایس ایم ایس، ایپس اور ای میل کے ذریعے فیس کے بارے میں مطلع کریں گے۔

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے