25.7 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

پی ٹی آئی دور میں گھوڑوں کے بجائے گدھوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، بلاول بھٹو

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ خبردار! اگر کسی نے نالائق حکومت کے لیے ریاست مدینہ کا لفظ استعمال کیا، ایک کام جو تحریک انصاف حکومت میں بہتر ہوا ہے وہ یہ کہ 2021 کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں گھوڑوں کی بہ نسبت گدھوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔

قومی اسمبلی کے بجٹ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمارے دور میں تنخواہوں میں 120 فیصد تک اضافہ کیا گیا تھا۔ سندھ حکومت نے تو اب بھی پنشن میں 100 فیصد اضافہ کیا ہے اور مزدور کی کم سے کم اجرت 25 ہزار روپے رکھی گئی ہے۔ دوسری طرف موجودہ حکومت نے سرکاری ملازمین سے جو وعدہ کیا تھا، آج انہیں بھی دھوکا دے دیا گیا۔ وفاقی بجٹ میں بالواسطہ ٹیکسز کا طوفان کھڑا کردیا گیا۔ آج ہر پاکستانی ان کی نالائقی اور ناکامی کا بوجھ اٹھا رہا ہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ اگر ملک میں معاشی ترقی ہورہی ہے تو تاریخی غربت اور بے روزگاری کیوں ہے؟ وزیراعظم عمران خان نے ایک کروڑ نوکریاں دینے کا اعلان کیا تھا لیکن اس کے برعکس جن کا روزگار تھا آپ نے ان کو بھی بے روزگار کردیا ہے۔ حکومت نے بجٹ دستاویز سے غربت اور بے روزگاری کا ڈیٹا ختم کردیا ہے۔ وزیراعظم کی معاشی ترقی کے سارے دعوے جھوٹے ہیں، حال ہی میں ملتان میں ایک عورت نے غربت کے باعث خودکشی کرلی۔ حکومت نے خود کو بے نقاب کردیا ہے، میں سمجھتا ہوں کہ یہ بجٹ اور بجٹ سیشن دونوں غیر قانونی ہیں۔

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ جناب اسپیکر! آپ کو نیا پاکستان مبارک ہو جہاں عام آدمی، کسان، مزدور، سفید پوش طبقہ، پنشنرز آپ کی مہنگائی بھگت رہے ہیں۔ آج پاکستان میں مہنگائی افغانستان اور بنگلا دیش سے بھی زیادہ ہے۔ تنخواہ دار طبقہ آج ادویات نہیں خرید سکتا، آپ نے عوام کو لاوارث چھوڑدیا ہے۔ عوام شاید اس مہنگائی کو معاف بھی کردیتے اگر ان کو لاوارث نہ چھوڑتے۔ ہمارے دور میں بھی مہنگائی تھی لیکن ہم نے عوام کو اس طرح لاوارث نہیں چھوڑا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج تک نیا این ایف سی ایوارڈ نہیں دیا گیا، جب تک این ایف سی ایوارڈ نہیں دیں گے ہر بجٹ غیر آئینی ہوگا۔ ہر رکن اسمبلی کا حق ہے کہ وہ بجٹ سیشن میں شرکت کرے، پی ٹی آئی کا سارا بجٹ جھوٹ پر مبنی ہے۔ عوام مہنگائی کے سونامی میں ڈوب رہے ہیں۔ پیپلز پارٹی تاریخی مہنگائی میں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام لائی، جب ایسے معاشی حالات ہوں تو عوام کو لاوارث نہیں چھوڑا جاتا۔

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے