28.2 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

موبائل فون کے زیادہ استعمال سے دماغ کی رسولی کا خطرہ؟

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

کیا آپ کو موبائل فون استعمال کرنے کی لت پڑ چکی ہے؟ تو ذہن میں رکھیں کہ اس کا اتنا زیادہ استعمال ٹھیک نہیں ہے۔

امریکا کی یونیورسٹی آف کیلی فورنیا برکلی کے اسکول آف پبلک ہیلتھ کی ایک تحقیق کے مطابق موبائل فون کا زیادہ استعمال دماغ میں رسولی (ٹیومر) جنم لینے کا سبب بنتا ہے۔

یہ تحقیق جنوبی کوریا کے نیشنل کینسر سینٹر اور سیول نیشنل یونیورسٹی کے ساتھ مل کر کی گئی ہے، جس میں پایا گیا ہے کہ 46 فیصد امریکی روزانہ 5 سے 6 گھنٹے فون استعمال کرتے ہیں اور 11 فیصد دن میں سات گھنٹے سے زیادہ اپنی ڈیوائس سے چپکے رہتے ہیں۔

یہ جامع تحقیق انٹرنیشنل جرنل آف انوائرمینٹل ریسرچ اینڈ پبلک ہیلتھ میں شائع ہوئی ہے، جس نے 46 دوسری تحقیقوں اور امریکا، سوئیڈن، برطانیہ، جاپان، جنوبی کوریا اور نیوزی لینڈ سمیت 16 ممالک کے ڈیٹا کا استعمال کیا ہے۔

اس تحقیق میں پایا گیا ہے کہ 10 سال کے عرصے کے دوران سیل کا 1,000 گھنٹوں سے زیادہ استعمال یعنی محض 17 منٹ روزانہ بھی دماغ میں رسولی پیدا ہونے کے خطرے کو 60 فیصد بڑھا دیتا ہے۔ جو لوگ ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے موبائل فونز استعمال کر رہے ہیں، ان میں رسولی کا خطرہ ان لوگوں سے نسبتاً زیادہ ہے کہ جو پانچ سال یا اس سے کم عرصے سے فونز کا استعمال کر رہے ہیں۔

برکلی پبلک ہیلتھ میں سینٹر فار فیملی اینڈ کمیونٹی ہیلتھ کے ڈائریکٹر جوئل ماسکووچ کہتے ہیں کہ موبائل فون کا استعمال صحت کے مختلف مسائل کو جنم دیتا ہے اور بد قسمتی سے ہماری سائنسی برادری نے اس پر بہت کم توجہ دی ہے۔

موبائل فونز سے صحت کو لاحق خطرات کے حوالے سے تحقیق پہلے بھی ہوئی ہیں، لیکن ماسکووچ کا کہنا ہے کہ ایک تو یہ تحقیق متنازع ہیں، پھر یہ ایک طاقتور صنعت کے بڑے معاشی نقصان کا باعث بن سکتی ہیں۔ مثلاً 2019ء میں نیشنل ٹاکسکولوجی پروگرام میں محققین نے موبائل فونز سے نکلنے والی تابکاری اور کینسر کے درمیان تعلق پر ایک تحقیق کی۔ یہ تحقیق 3 ہزار چوہوں پر کی گئی تھی، جس کے نتائج مشکوک تھے کیونکہ یہ ثابت نہیں کرتے تھے کہ تابکاری لوگوں کو بھی اسی طرح متاثر کر سکتی ہے یا نہیں۔

ایک تحقیق میں 20 سال کے عرصے کے دوران 4,20,000 موبائل فون صارفین کو ریکارڈ جمع کیا گیا اور محققین نے پایا کہ موبائل فون اور دماغ کی رسولیوں میں کوئی تعلق نہیں۔ البتہ دوسری تحقیقوں کا کہنا ہے کہ موبائل فون کا بہت زیادہ استعمال دماغی رسولی کی ایک خاص قسم glioma کا خطرہ بڑھا سکتی ہے۔

یہاں تک کہ امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (FDA) نے بھی اس کے صحت پر مضر اثرات سے انکار کیا۔ ان کے خیال میں اب تک کوئی ایسا مستقل یا قابلِ بھروسہ سائنسی ثبوت نہیں ملا جو موبائل فونز سے نکلنے والی ریڈیو فریکوئنسی سے صحت کے مسائل پیدا کرنے کے حق میں ہو۔

اب اِس زمانے میں کہ جس میں ‘ورک فرام ہوم’ ہو رہا ہے، موبائل فون سے چھٹکارا پانا تقریباً ناممکن ہے۔ اس لیے ماسکووچ کچھ مشورے دیتے ہیں جن کی مدد سے آپ اپنا موبائل فون کا استعمال محدود کر سکتے ہیں اور اس کے تابکاری کے اثرات سے بچ سکتے ہیں۔

  • جب استعمال نہ کر رہے ہوں تو فون کا وائی فائی اور بلوٹوتھ بند کر دیں
  • فون کو جسم سے کم از کم 10 انچ کے فاصلے پر رکھیں۔ اگر جیب میں رکھنا مجبوری ہو تو اسے ایئر پلین موڈ پر رکھیں
  • کالز کے لیے ہیڈ فونز یا اسپیکر فون کا استعمال کریں
  • سوتے ہوئے اپنا فون دوسرے کمرے میں رکھیں
  • سگنل کمزور آ رہے ہوں تو فون استعمال نہ کریں

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے