25.7 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

واٹس ایپ پر ایک مہینے میں 20 لاکھ بھارتی اکاؤنٹ بند

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

واٹس ایپ نے کہا ہے کہ اس نے مئی اور جون کے دوران سروسز کے غلط استعمال پر 20 لاکھ سے زیادہ بھارتی اکاؤنٹ بند کیے ہیں۔

بند کیے گئے اکاؤنٹس میں سے 95 فیصد صارفین حد سے زیادہ پیغامات فارورڈ کرنے کی وجہ سے پابندی کا شکار بنے ہیں۔

یہ انکشاف واٹس ایپ کی پہلی ماہانہ کمپلائنس رپورٹ میں ہوا ہے جو بھارت کے متنازع آئی ٹی قوانین کے تحت جاری کی گئی ہے۔

بھارت واٹس ایپ کی سب سے بڑی مارکیٹ ہے کہ جہاں اس ایپ کے 40 کروڑ صارفین موجود ہیں۔ یہ میسیجنگ سروس، جو فیس بک کی ملکیت ہے، کہتی ہے کہ اس کی بنیادی توجہ بھارت میں موجود اکاؤنٹس کے غلط اور غیر ضروری پیغامات کو بہت زیادہ پھیلنے سے روکنا ہے۔

واٹس ایپ جدید مشین لرننگ ٹیکنالوجی کی مدد سے دنیا بھر میں ہر ماہ تقریباً 80 لاکھ اکاؤنٹ بند کرتا ہے۔

جن کے پاس یہ ایپ ہوگی، ان کا واٹس ایپ بند ہو جائے گا

بھارت کے یہ 20 لاکھ اکاؤنٹس بہت زیادہ اور غیر معمولی شرح سے پیغامات فارورڈ کر رہے تھے، جس کی وجہ سے ان پر 15 مئی سے 15 جون کے دوران پابندی لگائی گئی۔ ادارے کے مطابق بھارتی اکاؤنٹس کی شناخت اُن کے ملک کے فون کوڈ یعنی 91 سے کی جاتی ہے۔

بھارت میں واٹس ایپ پر بارہا غلط معلومات اور جعلی خبریں پھیلانے کے الزامات لگتے رہتے ہیں اور اسے ‘جھوٹی خبروں کا گڑھ’ کہتے ہیں۔ جعلی اور بے وقوف بنانے والی خبریں لاکھوں مرتبہ واٹس ایپ کے ذریعے شیئر کی جاتی ہیں اور انہیں روکنا عملاً ناممکن ہے۔ ایسے پیغامات اور وڈیوز جو جنگل کی آگ کی طرح پھیل جاتی ہیں، ماضی میں بھارت میں ہجوم کے ہاتھوں تشدد یہاں تک کہ قتل کے واقعات کا بھی سبب بنی ہیں۔

بہرحال، واٹس ایپ کے یہ اقدامات اس وقت سامنے آ رہے ہیں جب آئی ٹی قوانین کی وجہ سے اس ادارے کی بھارتی حکومت کے ساتھ جنگ بڑھتی جا رہی ہے۔ واٹس ایپ نے تو بھارتی حکومت پر مقدمہ تک کر دیا تھا، جس میں اس کا کہنا تھا کہ یہ قوانین میسیجنگ سروس کو صارفین کی پرائیویسی کے تحفظ کی خلاف ورزی پر مجبور کریں گے۔

ٹوئٹر نے بھارت کے سامنے گھٹنے ٹیک دیے

یہ قانون فروری میں منظور کیا گیا تھا اور مئی سے لاگو ہو چکا ہے، جس کے تحت سوشل میڈیا اور اسٹریمنگ پلیٹ فارمز پر موجود مواد کو ضابطے میں لایا جا رہا ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ آزادئ اظہار اور صارفین کی پرائیویسی کے حوالے سے سنگین خدشات پیدا ہو چکے ہیں۔

اس نئے قانون پر تنقید کرنے والوں کا کہنا ہے کہ اس نے حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو انٹرنیٹ پر موجود مواد کی کی کئی اقسام کو ختم کرنے کا اختیار دے دیا ہے۔ لیکن حکومت دعویٰ کرتی ہے کہ ان کا مقصد استحصال اور غلط معلومات کو روکنا ہے۔

بہرحال، واٹس ایپ کے علاوہ ٹوئٹر، گوگل اور فیس بک پہلے ہی اپنی کمپلائنس رپورٹ پیش کر چکے ہیں۔

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے