28.2 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

بھارت، کرونا وائرس سے مرنے والوں کی اصل تعداد 24 لاکھ؟

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

بھارت میں کرونا وائرس سے مرنے والوں کی اصل تعداد سرکاری اعداد و شمار سے5 سے 7 گُنا زیادہ ہے۔

ملک میں رواں سال کے اوائل میں کووِڈ-19 کی دوسری لہر نے جنم لیا تھا، جو پھیلتی ہی چلی گئی اور اپریل اور مئی میں ملک کے ہسپتالوں میں جگہ کم پڑ گئی تھی اور بڑے پیمانے پر ہلاکتیں ہوئیں۔

بھارتی وزارتِ صحت کا کہنا ہے کہ وبا کے آغاز سے اب تک ملک میں 4,11,000 لوگ کرونا وائرس سے مرے ہیں لیکن ماہرین سمجھتے ہیں کہ یہ اصل تعداد سے کہیں کم ہے۔

معروف جریدے ‘اکنامسٹ’ کے مطابق امریکا کی ورجینیا کامن ویلتھ یونیورسٹی کے کرسٹوفر لیفلر کے جاری کردہ مقالے میں اندازہ لگایا گیا ہے کہ بھارت میں وبا کے آغاز سے اب تک کووِڈ-19 سے مرنے والوں کی تعداد 24 لاکھ تک ہو سکتی ہے۔ انہوں نے اپنی تحقیق میں اموات کا کم از کم اندازہ بھی 18 لاکھ لگایا ہے۔

اگر یہ اندازے درست ہیں تو اِس کا مطلب ہے کہ بھارت کرونا وائرس کے ہاتھوں اموات میں دنیا کے ملکوں سے بہت آگے ہیں۔

بھارت، ویکسین بھی کرونا وائرس کی تیسری لہر نہیں روک پائے گی

اِس وقت امریکا کو 6 لاکھ سے زیادہ اموات کے ساتھ کووِڈ-19 کا سب سے بڑا شکار سمجھا جاتا ہے۔

ایک دوسری تحقیق نے صرف بھارتی ریاست تلنگانہ میں کیے گئے انشورنس کلیمز کی بنیاد پر پتہ چلایا ہے کہ کرونا وائرس سے ہونے والی اموات سرکاری اعداد و شمار سے چھ گُنا زیادہ ہیں۔

البتہ بھارتی حکومت ان خبروں کی تردید کرتی آئی ہے اور دعویٰ کرتی ہے کہ یہ تحقیق سائنسی بنیادوں پر نہیں کی گئیں۔

لیکن معروف جریدے ‘فارن پالیسی’ کا کہنا ہے کہ بھارتی حکومت نے جس طرح کووِڈ-19 کی اموات کا ریکارڈ مرتب کیا ہے، اس سے پتہ چلتا ہے کہ اس نے اموات کی حقیقی تعداد کو خفیہ رکھا ہے۔

جریدے کے مطابق اس پورے معاملے میں سب سے پہلا مسئلہ ہے کہ بھارت میں موت کی رجسٹریشن کا ناقص نظام، وبا سے پہلے بھی بہت کم اموات کا سرکاری سطح پر اندراج ہوتا تھا۔ اس کی ایک وجہ مرنے سے پہلے طبی سہولیات کی عدم دستیابی ہے، جس کی بدولت کئی اموات سرکاری ریکارڈ میں نہیں آتیں۔

بھارت، کمبھ میلے میں ایک لاکھ جعلی کرونا ٹیسٹ کا انکشاف

البتہ چند مسائل موت کو رجسٹر کرنے کے حوالے سے بھی ہیں، خاص طور پر وبا کے دنوں میں۔ سرکاری ہدایات کے مطابق اگر کسی شخص کا انتقال وائرس کا ٹیسٹ ہوئے بغیر ہو جائے تو چاہے وہ کووِڈ کی علامات کے ساتھ بھی مرا ہو، تب بھی اس کی موت کو مشتبہ شمار کیا جائے گا۔

متعدد ریاستوں کے حکام کےمطابق صرف انہی اموات کو باضابطہ طور پر کووِڈ-19 کے کھاتے میں ڈالا گیا ہے جن کا ٹیسٹ مثبت آیا اور وہ ہسپتال میں چل بسے۔ ایسے افراد جو کووِڈ-19 ہی کی پیچیدگیوں کی وجہ سے مرے، لیکن وہ دیگر بڑے امراض کے بھی شکار تھے تو ان کی موت کووِڈ کے بجائے دائمی مرض کے کھاتے میں ڈالی گئی۔

ویسے بھارت اب بڑی حد تک دوسری لہر کے چنگل سے نکل چکا ہے اور اِس وقت روزانہ سامنے آنے والے مریضوں کی تعداد تقریباً 40 ہزار ہے۔ جبکہ مئی میں یہ 4 لاکھ سے تجاوز کر چکی تھی۔ عالمی ادارۂ صحت کے مطابق تب دنیا بھر میں ایک دن میں سامنے آنے والے مریضوں کی آدھی تعداد بھارت سے آتی تھی۔

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے