25.7 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

ہمارے بہت سے ایکشن میڈیا پر نظر نہیں آئیں گے، معید یوسف

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

وزیراعظم عمران خان کے مشیر برائے قومی سلامتی معید یوسف نے کہا ہے کہ پاکستان محفوظ ملک ہے، یہاں دہشت گردی کی لہر کا کوئی خطرہ نہیں ہے، کشمیر میں حدبندی کے معاملے پر آواز اٹھا رہے ہیں، ہمارے بہت سے ایکشن میڈیا پر نظر نہیں آئیں گے۔

نجی ٹی وی چینل دنیا نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ افغانستان میں ہمارا کوئی پسندیدہ نہیں ہے، ہم وہاں صرف امن چاہتے ہیں جتنا افغانستان میں ماحول بہتر ہوگا اتنا ہی پاکستان کے مفاد میں ہوگا۔ افغانستان میں وہ تمام علاقے جو پہلے کنٹرول میں ہوا کرتے تھے، اب وہ طالبان کے پاس چلے گئے ہیں۔

معید یوسف نے افغانستان کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہاں عدم استحکام بڑھتا جارہا ہے، افغان خانہ جنگی سے فائدہ دہشت گردوں اور بھارت کو ہی ہوگا اور بھارت اس سے بھرپور فائدہ اٹھا بھی رہا ہے۔ بھارت نے ہم سے کہا کہ ہم کشمیر کا معاملہ درست کرنا چاہتے ہیں، ہم نے انہیں مذاکرات کی بحالی کے لیے اپنی شرائط بھی بتادیں۔ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے ہماری پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی، ہم یہ نہیں برداشت کرسکتے کہ بھارت کشمیر میں جو چاہے کرتا رہے اور دنیا کو یہ دکھائے کہ ہم تو بہت اچھے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سی پیک سے کون خوش نہیں ہے؟ سی پیک ان لوگوں کے لیے خطرہ ہے جو چاہتے ہیں کہ پاکستان ترقی نہ کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ داسو واقعہ بہت بڑی ٹریجڈی ہے، پاکستان کے چین کے ساتھ بڑے مظبوط تعلقات ہیں۔ داسو ڈیمز میں کچھ رکاوٹ آئی لیکن کام بند نہیں کیا گیا، دشمن اپنی کوشش جاری رکھا ہوا ہے۔ داسو واقعے کی تحقیقات جاری ہیں، پاکستان اور چین مل کر معاملے کی تہہ تک پہنچیں گے اور واقعے میں ملوث عناصر کو سزا دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی پوزیشن کشمیر کاز سے منسلک ہے، پاکستان نے جو شرائط دی تھیں، 8 ماہ ہوگئے لیکن بھارت نے کچھ نہیں کیا۔ بھارت کشمیر پر اپنی پوزیشن بدلے گا تو ہم آگے بڑھیں گے۔ بھارت کشمیر میں مکمل طور پر ناکام ہوگیا ہے۔ بھارت کا خیال تھا کہ وہ بربریت اور جارحیت سے کشمیریوں کی آواز دبا دے گا لیکن وہ پالیسی میں کامیاب نہیں ہوا۔

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے