26.6 C
Islamabad
ہفتہ, ستمبر 18, 2021

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

تازہ ترین

بھارت میں موجود افغان مہاجرین مظاہروں پر مجبور ہو گئے

بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں موجود افغان مہاجرین ہفتہ بھر سے اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین (UNHCR) کے دفتر کے باہر احتجاج...

دنیا کا سب سے بڑا ‘ٹائروں کا قبرستان’ ختم کر دیا گیا

کویت کے صحرا میں 4.2 کروڑ سے زیادہ پرانے ٹائرز ری سائیکل ہونے کے انتظار میں پڑے ہوئے تھے کہ جسے دنیا کا سب...

پاکستان 2023ء میں 5جی لانچ کرے گا

پاکستان وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی و ٹیلی کام 2023ء تک ملک میں جدید ترین 5جی ٹیکنالوجی لانے کا ہدف رکھتی ہے۔ ملک میں گزشتہ تین سال...

بٹ کوائن کو بطور کرنسی قبول کرنے والا دنیا کا پہلا ملک

ایل سیلواڈور لاطینی امریکا میں واقع ایک ملک ہے، جس نے مشہور ڈجیٹل کرنسی 'بٹ کوائن' کو قانونی حیثیت دے دی ہے اور یہ...
- Advertisement -

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی یہاں جوق در جوق آ رہے ہیں۔

گھانا کے دارالحکومت اکرا میں مغربی افریقہ کی دوسری سب سے بڑی مسجد تعمیر کی گئی ہے، جس کے لیے سرمایہ ترک حکومت نے فراہم کیا ہے۔

مسجد استنبول کی مشہور نیلی مسجد کی طرز پر تعمیر کی گئی ہے، جس پر تقریباً ایک کروڑ ڈالرز کی لاگت آئی ہے۔ مسجد میں بیک وقت 15 ہزار افراد نماز ادا کر سکتے ہیں۔

قرآن مجید کی مختلف آیات کی خطاطی کے خوبصورت نمونے بھی مسجد میں جا بجا لگائے گئے ہیں جن میں خط ثلث سے لے کر خط نستعلیق تک سب شامل ہیں۔ مسجد میں سبز رنگ کے قالین بھی بچھائے گئے ہیں۔  مسجد کے بیرونی حصے کو خوبصورت سنگِ مرمر سے بنایا گيا ہے جبکہ اس کے چار مینار شہر کے دور دراز علاقوں سے بھی نظر آ رہے ہیں۔

‏42 ایکڑ کے رقبے پر پھیلے اس مسجد کے کمپلیکس میں امام  کی رہائش گاہ، ایک مدرسہ، ایک شفا خانہ، ایک کتب خانہ اور ایک مردہ خانہ بھی شامل ہے۔

مسجد کی تعمیر کا آغاز 2012ء میں ہوا تھا اور دو ہفتے قبل نمازِ جمعہ کے ساتھ اس کا باضابطہ افتتاح کیا گیا تھا۔ اس موقع پر نائیجر کے موجودہ صدر محمد بازوم اور سابق صدر محمد اسوفو بھی موجود تھے جبکہ ترکی کے نائب صدر فواد اوقتائی اور وزیر مذہبی امور علی ارباش خصوصی طور پر تشریف لائے تھے۔ گھانا کے نائب صدر  محمد باوومیا اور ملک کے معروف عالمِ دین عثمان نوح اس موقع پر مہمانوں کے استقبال کے لیے موجود تھے۔

گھانا مغربی افریقہ کا ایک اہم ملک ہے کہ جہاں مسلمانوں کی خاصی آبادی رہتی ہے۔ یہاں اسلام 10 ویں صدی ہی میں پہنچ گيا تھا اور آج ملک کی 17.6 فیصد آبادی مسلمان ہے۔ زیادہ تر مسلمان ملک کے شمالی علاقوں میں مقیم ہیں کہ جہاں ان کی شرح 80 فیصد سے زیادہ ہے۔ اس لیے جنوب میں واقع دارالحکومت میں اتنی بڑی مسجد کا تعمیر ہونا ایک اہم پیش رفت ہے۔

نماز پنجگانہ ادا کرنے کے لیے مسلمانوں کی آمد کے علاوہ اس وقت غیر مسلموں کی بڑی تعداد بھی اس تعمیراتی شاہکار کو دیکھنے کے لیے آ رہی ہے۔

مزید تحاریر

بھارت میں موجود افغان مہاجرین مظاہروں پر مجبور ہو گئے

بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں موجود افغان مہاجرین ہفتہ بھر سے اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین (UNHCR) کے دفتر کے باہر احتجاج...

دنیا کا سب سے بڑا ‘ٹائروں کا قبرستان’ ختم کر دیا گیا

کویت کے صحرا میں 4.2 کروڑ سے زیادہ پرانے ٹائرز ری سائیکل ہونے کے انتظار میں پڑے ہوئے تھے کہ جسے دنیا کا سب...

پاکستان 2023ء میں 5جی لانچ کرے گا

پاکستان وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی و ٹیلی کام 2023ء تک ملک میں جدید ترین 5جی ٹیکنالوجی لانے کا ہدف رکھتی ہے۔ ملک میں گزشتہ تین سال...

بٹ کوائن کو بطور کرنسی قبول کرنے والا دنیا کا پہلا ملک

ایل سیلواڈور لاطینی امریکا میں واقع ایک ملک ہے، جس نے مشہور ڈجیٹل کرنسی 'بٹ کوائن' کو قانونی حیثیت دے دی ہے اور یہ...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے