26 C
Islamabad
ہفتہ, ستمبر 18, 2021

بٹ کوائن کو بطور کرنسی قبول کرنے والا دنیا کا پہلا ملک

تازہ ترین

بھارت میں موجود افغان مہاجرین مظاہروں پر مجبور ہو گئے

بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں موجود افغان مہاجرین ہفتہ بھر سے اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین (UNHCR) کے دفتر کے باہر احتجاج...

دنیا کا سب سے بڑا ‘ٹائروں کا قبرستان’ ختم کر دیا گیا

کویت کے صحرا میں 4.2 کروڑ سے زیادہ پرانے ٹائرز ری سائیکل ہونے کے انتظار میں پڑے ہوئے تھے کہ جسے دنیا کا سب...

پاکستان 2023ء میں 5جی لانچ کرے گا

پاکستان وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی و ٹیلی کام 2023ء تک ملک میں جدید ترین 5جی ٹیکنالوجی لانے کا ہدف رکھتی ہے۔ ملک میں گزشتہ تین سال...

بٹ کوائن کو بطور کرنسی قبول کرنے والا دنیا کا پہلا ملک

ایل سیلواڈور لاطینی امریکا میں واقع ایک ملک ہے، جس نے مشہور ڈجیٹل کرنسی 'بٹ کوائن' کو قانونی حیثیت دے دی ہے اور یہ...
- Advertisement -

ایل سیلواڈور لاطینی امریکا میں واقع ایک ملک ہے، جس نے مشہور ڈجیٹل کرنسی ‘بٹ کوائن’ کو قانونی حیثیت دے دی ہے اور یہ اب امریکی ڈالر کی طرح ملک میں سکہ رائج الوقت کے طور پر استعمال ہوگی۔

اس فیصلے کے باضابطہ نفاذ کے ساتھ ہی ملک نے مزید 200 بٹ کوائنز خرید لیے ہیں اور ملک کے پاس موجود کُل بٹ کوائنز کی تعداد 400 تک پہنچ چکی ہے، جن کی موجودہ مارکیٹ میں مالیت 2.1 کروڑ ڈالرز ہے۔ ملکی اسمبلی نے جون میں بٹ کوائن کو سکہ رائچ الوقت کا درجہ دینے کا قانون منظور کیا تھا۔

یوں ایل سیلواڈور دنیا کا پہلا ملک بن گیا ہے، جس نے بٹ کوائن کو باقاعدہ کرنسی کی حیثیت دی ہے اور یہی بات بٹ کوائن کے ساتھ ساتھ عالمی معیشت کے لیے بھی ایک بڑا چیلنج ہوگی۔

عالمی بینک نے ایل سیلواڈور حکومت کے اس مطالبے کو مسترد کر دیا تھا کہ وہ بٹ کوائن کے نفاذ میں اس کی مدد کرے اور اس حوالے سے ماحولیات اور شفافیت کے خدشات کا بہانہ بنایا۔

پاکستان اضافی بجلی سے بٹ کوائن بنا کر اپنا تمام قرضہ اتار سکتا ہے

بہرحال، حکومت اب ملک کے قومی شناختی کارڈ کے ساتھ رجسٹرڈ ہونے والے صارفین کو Chivo نامی ایک بٹ کوائن والٹ فراہم کرے گی، جس میں پہلے سے 30 ڈالرز ڈجیٹل کرنسی کی صورت میں موجود ہوں گے۔ کاروباری اداروں کو اشیا اور خدمات کے بدلے میں ڈجیٹل کوائن قبول کرنے پڑیں گے اور حکومت ٹیکس وغیرہ کے حصول کے لیے بھی بٹ کوائن لے گی۔

ماہرین کے مطابق یہ قدم اٹھا تو لیا گیا ہے لیکن اس میں خطرہ بہت زیادہ ہے اور ایل سیلواڈور جیسے غریب ملک کے لیے تو اس کے نتائج بہت بھیانک نکل سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ اس وقت ایک بٹ کوائن کی قیمت 51 ہزار ڈالرز سے زیادہ ہے۔ لیکن اس کی قیمتوں میں بہت تیزی سے کمی بیشی ہوتی ہے۔ ایک سال پہلے یہ 10 ہزار ڈالرز کا تھا، مئی میں یہ 65 ہزار ڈالرز کی بلند ترین سطح پر پہنچا اور اب اس وقت تقریبآً 51 ہزار ڈالرز کا ہے۔

کسی ملک کی معیشت اتنی تیزی سے بدلتی کرنسی کے ساتھ کس طرح چل سکتی ہے، یہ سوال ہے جس کا جواب کچھ ہی عرصے میں سامنے آ جائے گا۔

مزید تحاریر

بھارت میں موجود افغان مہاجرین مظاہروں پر مجبور ہو گئے

بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں موجود افغان مہاجرین ہفتہ بھر سے اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین (UNHCR) کے دفتر کے باہر احتجاج...

دنیا کا سب سے بڑا ‘ٹائروں کا قبرستان’ ختم کر دیا گیا

کویت کے صحرا میں 4.2 کروڑ سے زیادہ پرانے ٹائرز ری سائیکل ہونے کے انتظار میں پڑے ہوئے تھے کہ جسے دنیا کا سب...

پاکستان 2023ء میں 5جی لانچ کرے گا

پاکستان وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی و ٹیلی کام 2023ء تک ملک میں جدید ترین 5جی ٹیکنالوجی لانے کا ہدف رکھتی ہے۔ ملک میں گزشتہ تین سال...

بٹ کوائن کو بطور کرنسی قبول کرنے والا دنیا کا پہلا ملک

ایل سیلواڈور لاطینی امریکا میں واقع ایک ملک ہے، جس نے مشہور ڈجیٹل کرنسی 'بٹ کوائن' کو قانونی حیثیت دے دی ہے اور یہ...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے