17 C
Islamabad
جمعرات, اکتوبر 29, 2020

نوّے فیصد لوگ اب گھر سے کام کرنا چاہتے ہیں: سروے

تازہ ترین

سلیکون ویلی میں بھارتی انجینئرز کا راج، اپنے ساتھ ذات پات کا نظام بھی لے آئے

جب بینجمن کائیلا 1999ء میں بھارت سے ہجرت کرکے امریکا پہنچے تو انہوں نے ایک امریکی ٹیک کمپنی میں ملازمت کے لیے درخواست جمع...

باکسنگ ڈے ٹیسٹ میں 25 ہزار تماشائی ہوں گے

ہر سال 26 دسمبر کو آسٹریلیا میں باکسنگ ڈے کے موقع پر ٹیسٹ میچ کھیلا جاتا ہے اور رواں سال یہ مقابلہ آسٹریلیا اور...

دھات سے بنا سیارچہ دریافت، مالیت ہماری دنیا کی کُل معیشت سے ہزاروں گُنا زیادہ

امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے 'ناسا' نے غیر معمولی دھاتوں کا حامل ایک سیارچہ (asteroid) دریافت کر لیا ہے، جس کی مالیت کا اندازہ دنیا...

غیر ملکیوں کے لیے خوشخبری، سعودی عرب "کفالۃ” نظام کا خاتمہ کرنے لگا

سعودی عرب غیر ملکی کارکنوں کے لیے "کفالۃ" کے نظام کو منسوخ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے، جس کی جگہ آجرین اور ملازمین...

کرونا وائرس کی وجہ سے لگائی گئی پابندیاں تو اب آہستہ آہستہ نرم پڑتی جا رہی ہیں، لیکن ان چند مہینوں نے روزمرہ زندگی کو بدل کر رکھ دیا ہے۔ ‘ورک فرام ہوم’ یعنی گھر سے کام کرنے کا جو راستہ نظر آ گیا ہے، اب شاید ہی کوئی ایسا ہو جو دفتر جا کر کام کرنے کو ترجیح دے رہا ہو۔ ایک حالیہ سروے میں پتہ چلا ہے کہ ہر 10 میں سے 9 افراد پابندیاں ختم ہونے کے بعد بھی چاہتے ہیں کہ انہیں اپنی مرضی کے مطابق دفتر یا گھر سے کام کرنے کا آپشن ملنا چاہیے۔

سسکو سسٹمز کے سروے کے مطابق اب ملازمین زیادہ خود مختاری چاہتے ہیں کیونکہ وباء نے دنیا بھر میں کام کے حوالے سے رویّے میں بڑی تبدیلی پیدا کی ہے۔ دو تہائی افراد ایسے ہیں جنہوں نے گھر سے کام کرنے کے فوائد اور اس سے درپیش چیلنجز کو بھی سراہا ہے۔

بدھ کو جاری ہونے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سروے میں شامل افراد میں سے 5 فیصد ایسے تھے جو لاک ڈاؤن سے پہلے ہی زیادہ تر کام گھر سے کرتے تھے، لیکن اب 87 فیصد ملازمین چاہتے ہیں کہ انہیں یہ آپشن ملنا چاہیے کہ وہ کب اور کیسے کام کریں اور گھر سے کریں یا دفتر آئیں۔

سسکو کے نائب صدر گورڈن تھامسن نے کہا ہے کہ اب وقت آ چکا ہے کہ ادارے خود کو نئے حالات کے مطابق ڈھالیں، جدید دور کے ملازمین کے مطالبات پر پورا اتریں جو اب بہتر کمیونی کیشن اور تعاون کو بہت اہمیت دے رہے ہیں۔

سسکو نے اِس سروے میں یورپ، مشرق وسطیٰ اور روس کی 12 مارکیٹوں میں 10 ہزار لوگوں کو شامل کیا تھا کہ جس کو ‘ورک فورس فار دی فیوچر’ ریسرچ کا نام دیا گیا ہے۔

مزید تحاریر

سلیکون ویلی میں بھارتی انجینئرز کا راج، اپنے ساتھ ذات پات کا نظام بھی لے آئے

جب بینجمن کائیلا 1999ء میں بھارت سے ہجرت کرکے امریکا پہنچے تو انہوں نے ایک امریکی ٹیک کمپنی میں ملازمت کے لیے درخواست جمع...

باکسنگ ڈے ٹیسٹ میں 25 ہزار تماشائی ہوں گے

ہر سال 26 دسمبر کو آسٹریلیا میں باکسنگ ڈے کے موقع پر ٹیسٹ میچ کھیلا جاتا ہے اور رواں سال یہ مقابلہ آسٹریلیا اور...

دھات سے بنا سیارچہ دریافت، مالیت ہماری دنیا کی کُل معیشت سے ہزاروں گُنا زیادہ

امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے 'ناسا' نے غیر معمولی دھاتوں کا حامل ایک سیارچہ (asteroid) دریافت کر لیا ہے، جس کی مالیت کا اندازہ دنیا...

غیر ملکیوں کے لیے خوشخبری، سعودی عرب "کفالۃ” نظام کا خاتمہ کرنے لگا

سعودی عرب غیر ملکی کارکنوں کے لیے "کفالۃ" کے نظام کو منسوخ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے، جس کی جگہ آجرین اور ملازمین...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے