17 C
Islamabad
جمعرات, اکتوبر 29, 2020

پاکستان کے منفرد ترین یوٹیوب چینلز

تازہ ترین

سلیکون ویلی میں بھارتی انجینئرز کا راج، اپنے ساتھ ذات پات کا نظام بھی لے آئے

جب بینجمن کائیلا 1999ء میں بھارت سے ہجرت کرکے امریکا پہنچے تو انہوں نے ایک امریکی ٹیک کمپنی میں ملازمت کے لیے درخواست جمع...

باکسنگ ڈے ٹیسٹ میں 25 ہزار تماشائی ہوں گے

ہر سال 26 دسمبر کو آسٹریلیا میں باکسنگ ڈے کے موقع پر ٹیسٹ میچ کھیلا جاتا ہے اور رواں سال یہ مقابلہ آسٹریلیا اور...

دھات سے بنا سیارچہ دریافت، مالیت ہماری دنیا کی کُل معیشت سے ہزاروں گُنا زیادہ

امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے 'ناسا' نے غیر معمولی دھاتوں کا حامل ایک سیارچہ (asteroid) دریافت کر لیا ہے، جس کی مالیت کا اندازہ دنیا...

غیر ملکیوں کے لیے خوشخبری، سعودی عرب "کفالۃ” نظام کا خاتمہ کرنے لگا

سعودی عرب غیر ملکی کارکنوں کے لیے "کفالۃ" کے نظام کو منسوخ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے، جس کی جگہ آجرین اور ملازمین...

گزشتہ دس، پندرہ سالوں میں دنیا بہت بدل چکی ہے۔ جب 2005ء میں یوٹیوب کی بنیاد رکھی گئی تھی تو شاید اس کے بنانے والوں نے بھی نہیں سوچا ہوگا کہ یہ ویب سائٹ میڈیا کی دنیا میں اتنا بڑا انقلاب لے آئے گی۔ آج یوٹیوب دنیا کا مقبول ترین سوشل میڈیا پلیٹ فارم ہے کہ جس کے صارفین کی تعداد 2 ارب سے زیادہ ہے۔ روزانہ ایک ارب گھنٹے سے زیادہ کی وڈیوز یوٹیوب پر دیکھی جاتی ہیں، یعنی نیٹ فلکس اور فیس بک کی وڈیوز ملا لی جائیں، اس سے بھی زیادہ۔

یوٹیوب نے بھی پاکستان میں جلد ہی مقام بنا لیا لیکن درمیان میں سالہا سال تک پابندی کی وجہ سے پاکستان میں اس جدید پلیٹ فارم کی نمو رُک سی گئی۔ بہرحال، جب پابندی کا خاتمہ ہوا تو پاکستانی بھی اپنے نت نئے آئیڈیاز کے ساتھ یوٹیوب پر پہنچ گئے اور آج ہم بھی کسی سے پیچھے نہیں۔

ڈرامے، فلمیں اور میوزک وغیرہ تو ویسے ہی ‘ٹرینڈنگ’ میں رہتا ہے لیکن اس سے ہٹ کر بھی پاکستان کے چند یوٹیوب چینلز اپنے منفرد موضوعات اور مواد کی وجہ سے مقبول ہو رہے ہیں۔ آئیے آپ کو چند ایسے ہی چینلز کے بارے میں بتاتے ہیں:

بلوچستان – لینڈ آف بیوٹی

پاکستان میں سیاحت کا نام آتے ہی خیبر پختونخوا اور گلگت بلتستان کا نام آتا ہے، لیکن پاکستان کا سب سے بڑا صوبہ بلوچستان اس شعبے میں ذرا پیچھے ہے۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ سیاحت کے آگے بڑھنے کے جتنے مواقع بلوچستان میں ہیں، شاید ہی پاکستان کے کسی دوسرے صوبے میں ہوں۔ بلوچستان کے انہی منفرد مقامات کو دنیا کے سامنے لانے کا کام یہ چینل "Balochistan: Land of Beauty” کر رہا ہے۔ اس چینل کا مقصد ہے "بلوچستان کے لوگوں، جغرافیے، ثقافت، کھانے پینے کی چیزوں اور سیاحتی مقامات کی ترویج”۔ آپ کو اس چینل پر کوئٹہ سے لے کر تفتان سرحد، زیارت کے پہاڑوں سے گوادر کے ساحلوں تک، پنجگور کے باغات سے نوشکی کے صحراؤں تک اور سبّی کے گرم ترین شہر سے لے کر دور دراز ترین علاقے واشک تک، بلوچستان کو چپے چپے کی معلومات ملیں گی۔ معلومات ساتھ ساتھ بہترین ڈرون شاٹس ان وڈیوز کا لطف دوبارہ کر دیتے ہیں۔ چینل پر اب تک 111 وڈیوز اپلوڈ کی جا چکی ہیں۔ (چینل کا لنک)


علی احمد

یہی کام سیالکوٹ سے تعلق رکھنے والے نوجوان علی احمد بھی کر رہے ہیں، البتہ ان کی موٹر سائیکل، اور ڈرون، کا رُخ زیادہ تر شمالی علاقوں کی طرف رہتا ہے۔ ان کے چینل پر آپ کو نتھیا گلی کی برفیلی شاہراہ سے لے کر کشمیر کی رتّی گلی تک، سیالکوٹ کے زرخیز میدانوں سے لے کر اسکردو، غذر، یہاں تک کہ پاکستان کے بلند ترین پہاڑ کے-ٹو کے دامن تک کی وڈیوز ملیں گی۔ ان کے چینل پر موجود 157 وڈیوز سے سے آپ کو اندازہ ہوگا کہ پاکستان کتنا خوبصورت ہے۔ (چینل کا لنک)


دیکھو، سنو، جانو

اگر معلوماتی چینلز کی بات کریں تو پاکستان کا کوئی یوٹیوب چینل ‘دیکھو، سنو، جانو’ کا مقابلہ نہیں کر سکتا۔ یہ چینل "علم کی پیاس اور سچ کی جستجو رکھنے والے کے لیے” ہے اور اب تک 14 لاکھ سے زیادہ سبسکرائبرز حاصل کر چکا ہے۔ چینل کا سب سے خاص سلسلہ "پاکستان کی تاریخ” تھا، جس کی 55 وڈیوز میں قیامِ پاکستان سے لے کر ماضی قریب تک کے کئی اہم واقعات کا احاطہ کیا گیا۔ اس کے علاوہ جنگ ستمبر 1965ء اور سقوط ڈھاکا 1971ء پر الگ سے خاص سلسلے بھی پیش کیے گئے۔ چینل کی سلطنت عثمانیہ کی تاریخ پر بنائی گئی وڈیوز بھی کافی مقبول ہوئیں۔ چینل عالمی تاریخ کے کئی اہم پہلوؤں اور شخصیات کا بھی احاطہ کرتا ہے۔ (چینل کا لنک)


کامران آن بائیک

کامران علی کی شخصیت حیران کُن ہے۔ لیّہ، پنجاب میں پیدا ہونے والے کامران جرمنی میں رہتے ہیں اور انہیں شوق ہے سائیکل چلانے کا اور اتنا زیادہ ہے کہ وہ جرمنی سے اپنے گھر لیّہ تک بھی سائیکل پر آ چکے ہیں۔ ابھی حال ہی میں انہوں نے جنوبی امریکا کے انتہائی جنوبی علاقے سے شمالی امریکا کے انتہائی شمال تک کا سفر بھی سائیکل پر کیا ہے، یعنی ‘پین-امریکن ہائی وے’ پر۔ وہ اپنے سفر کے کئی لمحات یوٹیوب پر بھی پیش کر چکے ہیں۔ ان کی ایک، ایک وڈیو دیکھنے سے تعلق رکھتی ہے۔ ویسے حال ہی میں کامران علی کا ایک دلچسپ انٹرویو بی بی سی اردو پر بھی آیا ہے، جو پڑھنے سے تعلق رکھتا ہے۔ (چینل کا لنک)


GFX Mentor

عمران علی دینہ گرافک ڈیزائننگ کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں اور اب اس تجربے کو نئی نسل میں منتقل کر رہے ہیں، یوٹیوب پر مفت تعلیم کے ذریعے۔ ایڈوبی فوٹوشاپ اور السٹریٹر جیسے سافٹ ویئرز سے آغاز کرنے کے بعد عمران صاحب اب مزید سافٹ ویئرز بھی سکھا رہے ہیں۔ ان کے سمجھانے کا انداز منفرد ہیں اور لائیو سیشنز تو کمال کے ہیں۔ (چینل کا لنک)


کچن وِد آمنہ

وہ زمانے گزر گئے جب کوئی نئی ترکیب آزمانے کے لیے ‘کُک بکس’ کا رخ کیا جاتا تھا۔ اب نئے زمانے کے نئے تقاضے ہیں اور ساتھ ہی نئے حل بھی، جیسا کہ ‘کچن وِد آمنہ’۔ آمنہ تقریباً روزانہ ہی کسی نہ کسی ڈش کی ترکیب کے ساتھ یوٹیوب پر حاضر ہوتی ہیں۔ جون 2016ء سے لے کر اب تک وہ تقریباً ایک ہزار وڈیوز اپلوڈ کر چکی ہیں اور ان کے سبسکرائبرز کی تعداد تقریباً 37 لاکھ ہے۔ آپ کو سموسہ بند کرنے کا طریقہ سیکھنا ہو یا اسکول جانے والے بچوں کو ناشتے کے لیے نت نئے آئٹمز دینے ہوں، خاندان بھر کی دعوت کے لیے کچھ نیا بنانا ہو یا روزمرہ کے کھانوں کو نیا ذائقہ دینا ہو، آمنہ صاحبہ کا چینل ‘ون اسٹاپ شاپ’ ہے۔ (چینل کا لنک)


ادبی دنیا

ویسے یہ چینل پاکستان سے تو نہیں چلایا جاتا، بلکہ پڑوسی ملک بھارت کے اردو دانوں کا کارنامہ ہے، لیکن کیونکہ اس میں زیادہ تر پاکستانی ادیبوں کے فن پارے موجود ہیں اس لیے ہم اسے فہرست کا حصہ بنا رہے ہیں۔ جیسا کہ نام سے ظاہر ہے کہ یہ اردو اور ہندی نثر اور شاعری کا چینل ہے اور ان لوگوں کے لیے ہے جو پڑھنے کا وقت نہیں نکال پاتے، لیکن ‘آڈیو بکس’ سُن سکتے ہیں۔ یہ چینل اب تک عبد اللہ حسین کے مشہور ناول ‘اداس نسلیں، انتظار حسین کے ‘بستی’ اور خدیجہ مستور کے ‘آنگن’ کے علاوہ سعادت حسن منٹو، منشی پریم چند، غلام عباس، کرشن چندر کے کئی افسانے اور جون ایلیا کے مجموعہ کلام کا بڑا حصہ آواز میں منتقل کر چکا ہے، یعنی اردو ادب کا بڑا خزانہ یہاں موجود ہے۔ آپ بھی ضرور دیکھیں۔ (چینل کا لنک)


سائٹس اینڈ ساؤنڈز

یہ چینل اُن لوگوں کے لیے ہے جو ریل گاڑیوں کے شوقین ہیں۔ آخر کون ہوگا کہ جسے بچپن میں بڑا ہوکر ریل گاڑی کا ڈرائیور بننے کا شوق نہ ہو؟ یہی وجہ ہے کہ ریل کے سفر میں ایک عجیب سی کشش محسوس ہوتی ہے۔ اس چینل پر آپ کو پاکستان کے مختلف شہروں کے درمیان سفر کی وڈیوز بھی ملیں گی، لیکن ساتھ ہی پاکستان ریلویز کی تاریخ بھی جانیں گے اور کافی تکنیکی معلومات بھی ملے گی۔ جیسا کہ ریلوے کا سگنل سسٹم کیسے کام کرتا ہے؟ ریل گاڑی میں موجود پاور وین کا کام کیا ہے؟ وزیر اعظم کے لیے بنایا گیا ریل گاڑی کا وی وی آئی پی ڈبہ اندر سے کیسا ہے اور آپ اس ڈبے کو اپنے لیے کیسے بُک کروا سکتے ہیں؟ یہ پاکستان میں ریل کے مستقبل کے منصوبوں سے بھی آگہی دیتا ہے۔ اس چینل پر آپ کو درجنوں وڈیوز ملیں گی جن کے ذریعے آپ پاکستان ریلویز کے بارے میں بہت کچھ جان سکتے ہیں۔ (چینل کا لنک)

آپ کے خیال میں اور کون کون سے چینل اس فہرست کا حصہ بننے چاہئیں؟ ہمیں ضرور بتائیں۔ ہو سکتا ہے آپ کی تجاویز سے اس سلسلے کی ایک اور تحریر بن جائے؟

مزید تحاریر

سلیکون ویلی میں بھارتی انجینئرز کا راج، اپنے ساتھ ذات پات کا نظام بھی لے آئے

جب بینجمن کائیلا 1999ء میں بھارت سے ہجرت کرکے امریکا پہنچے تو انہوں نے ایک امریکی ٹیک کمپنی میں ملازمت کے لیے درخواست جمع...

باکسنگ ڈے ٹیسٹ میں 25 ہزار تماشائی ہوں گے

ہر سال 26 دسمبر کو آسٹریلیا میں باکسنگ ڈے کے موقع پر ٹیسٹ میچ کھیلا جاتا ہے اور رواں سال یہ مقابلہ آسٹریلیا اور...

دھات سے بنا سیارچہ دریافت، مالیت ہماری دنیا کی کُل معیشت سے ہزاروں گُنا زیادہ

امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے 'ناسا' نے غیر معمولی دھاتوں کا حامل ایک سیارچہ (asteroid) دریافت کر لیا ہے، جس کی مالیت کا اندازہ دنیا...

غیر ملکیوں کے لیے خوشخبری، سعودی عرب "کفالۃ” نظام کا خاتمہ کرنے لگا

سعودی عرب غیر ملکی کارکنوں کے لیے "کفالۃ" کے نظام کو منسوخ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے، جس کی جگہ آجرین اور ملازمین...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے