17 C
Islamabad
جمعرات, اکتوبر 29, 2020

وزیراعظم عمران خان کو نوازشریف کا شکریہ ادا کرنا چاہیے – یشفین جمال کا تجزیہ

تازہ ترین

سلیکون ویلی میں بھارتی انجینئرز کا راج، اپنے ساتھ ذات پات کا نظام بھی لے آئے

جب بینجمن کائیلا 1999ء میں بھارت سے ہجرت کرکے امریکا پہنچے تو انہوں نے ایک امریکی ٹیک کمپنی میں ملازمت کے لیے درخواست جمع...

باکسنگ ڈے ٹیسٹ میں 25 ہزار تماشائی ہوں گے

ہر سال 26 دسمبر کو آسٹریلیا میں باکسنگ ڈے کے موقع پر ٹیسٹ میچ کھیلا جاتا ہے اور رواں سال یہ مقابلہ آسٹریلیا اور...

دھات سے بنا سیارچہ دریافت، مالیت ہماری دنیا کی کُل معیشت سے ہزاروں گُنا زیادہ

امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے 'ناسا' نے غیر معمولی دھاتوں کا حامل ایک سیارچہ (asteroid) دریافت کر لیا ہے، جس کی مالیت کا اندازہ دنیا...

غیر ملکیوں کے لیے خوشخبری، سعودی عرب "کفالۃ” نظام کا خاتمہ کرنے لگا

سعودی عرب غیر ملکی کارکنوں کے لیے "کفالۃ" کے نظام کو منسوخ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے، جس کی جگہ آجرین اور ملازمین...

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کا گوجرانوالہ جلسہ بالآخر ہوگیا۔ حکومت سے متعلق پہلے میں اپنا یہ تجزیہ لکھ چکی ہوں کہ شاید زیادہ مزاحمت نہ کرے، اور ایسا ہی ہوا۔ حکومت نے اچھا ہی کیا، اگر پکڑدھکڑ، روک ٹوک ہوتی تو نقصان اسی کا ہوتا۔

جلسے میں تعداد بھی مناسب تھی۔ اس سے اہم بات یہ ہے کہ اپوزیشن ماحول بنانے میں بہت حد تک کامیاب رہی۔ آج مختلف مواقع پر تین چار اہم حکومتی اراکین نے پریس کانفرنسز کیں۔ شیخ رشید بھی میدان میں آئے اور کافی سخت لہجے میں گفتگو کی۔ اس کا مطلب یہی لیا جاسکتا ہے کہ اپوزیشن توجہ حاصل کرنا چاہتی تھی، اور اس کا یہ وار کارگر رہا۔

جلسہ اپوزیشن کی تین بڑی جماعتوں کا تھا، لیکن یوں لگا جیسے پنڈال پاکستان مسلم لیگ ن کے لیے سجایا گیا ہو۔ زیادہ کوریج بھی اسی کو ملی اور زیادہ گرجتی برستی بھی وہی نظر آئی۔

مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کی تقریر سب کے لیے حیران کن تھی۔ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ کسی حاضر سروس جنرل اور آئی ایس آئی چیف کا نام اس طرح کھل کر لیا گیا ہو۔ اس کے لیے چاہے جتنے بھی جواز تراشے جائیں، لیکن حقیقت یہ ہے کہ نوازشریف نے اپنی حدود سے تجاوز کیا۔ وہ اس ملک کے تین بار وزیراعظم رہ چکے ہیں۔ وہ پاکستان کی ایک بڑی جماعت کے قائد ہیں۔ پوری دنیا میں ایسے شخص کی گفتگو کو اہمیت دی جاتی ہے۔ خصوصا انڈیا ایسے کسی بھی موقع سے فائدہ اُٹھانا ضروری سمجھتا ہے۔ توقع کے عین مطابق آج انڈیا کے تمام اخبارات نے نوازشریف کی اس تقریر کو اپنا جامہ پہنایا اور پاک فوج کے خلاف بغض نکال کر کسر پوری کردی۔

نوازشریف اس وقت پاکستان میں سینئر ترین سیاست دانوں کی کیٹگری میں آتے ہیں۔ جو کچھ وہ کررہے ہیں، یقینا اس کے نتائج کا انہیں اندازہ ہوگا، لیکن میری نظر میں نوازشریف نے اپنی تقریر سے وزیراعظم عمران خان اور اسٹبلشمنٹ کو مزید قریب کردیا۔ مستقبل میں بھی جیسے جیسے نوازشریف کی اسٹبلشمنٹ سے متعلق تنقید میں اضافہ ہوتا چلا جائے گا، ویسے ویسے وزیراعظم عمران خان کی حیثیت بڑھتی چلی جائے گی۔ وزیراعظم کے لیے بھی یہ باور کرانا آسان ہوگا کہ میرے علاوہ کوئی چوائس نہیں۔ اسٹبلشمنٹ کے اندر بھی یہ سوچ مضبوط ہوتی چلی جائے گی کہ عمران خان کے علاوہ کوئی آپشن نہیں۔ سو یہ کہنا غلط نہ ہوگا کہ وزیراعظم عمران خان کو نوازشریف کا شکرگزار ہونا چاہیے۔

اندر کی خبر بھی یہی ہے کہ وزیراعظم عمران خان کو اب تک اپوزیشن سے کسی قسم کامسئلہ نہیں، وہ خوش ہیں اور ان کی خواہش بھی یہی ہے کہ اپوزیشن مزید سخت لہجہ اختیار کرے۔ اس طرح اسٹبلشمنٹ اور اپوزیشن کے درمیان دوریاں مزید بڑھیں گی اور اس دوری کا سب سے بڑا بینیفشری وزیراعظم عمران خان ہوں گے۔ آج شیخ رشید نے بھی یہی کچھ اپنی گفتگو میں کہا ہے کہ نوازشریف معاملات وہاں تک لے جارہے ہیں کہ اگلے پانچ سال بھی وزیراعظم عمران خان ہی رہیں۔

حکومت اور اپوزیشن کی حد تک تو معاملات ٹھیک ہیں۔ جمہوریت کے اندر ایسے رویوں کا ہونا کوئی انہونی بات نہیں۔ لیکن جس انداز سے اپوزیشن نے ملکی اداروں خصوصا اسٹبلشمنٹ کو آڑے ہاتھوں لینا شروع کیا ہے، اور بات اب براہِ راست آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی تک پہنچ گئی ہے۔ یہ سب پوری دنیا میں جگ ہنسائی کا سبب بن رہا ہے۔ سیاست ہوتی رہے گی، لیکن ملک سب سے پہلے ہے۔ یہ نہ ہو کہ سیاست دان آپس کی لڑائی میں ملک کے ساتھ کچھ ایسا کرجائیں کہ جس کا ازالہ کرتے کرتے عشرے گزر جائیں۔

مزید تحاریر

سلیکون ویلی میں بھارتی انجینئرز کا راج، اپنے ساتھ ذات پات کا نظام بھی لے آئے

جب بینجمن کائیلا 1999ء میں بھارت سے ہجرت کرکے امریکا پہنچے تو انہوں نے ایک امریکی ٹیک کمپنی میں ملازمت کے لیے درخواست جمع...

باکسنگ ڈے ٹیسٹ میں 25 ہزار تماشائی ہوں گے

ہر سال 26 دسمبر کو آسٹریلیا میں باکسنگ ڈے کے موقع پر ٹیسٹ میچ کھیلا جاتا ہے اور رواں سال یہ مقابلہ آسٹریلیا اور...

دھات سے بنا سیارچہ دریافت، مالیت ہماری دنیا کی کُل معیشت سے ہزاروں گُنا زیادہ

امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے 'ناسا' نے غیر معمولی دھاتوں کا حامل ایک سیارچہ (asteroid) دریافت کر لیا ہے، جس کی مالیت کا اندازہ دنیا...

غیر ملکیوں کے لیے خوشخبری، سعودی عرب "کفالۃ” نظام کا خاتمہ کرنے لگا

سعودی عرب غیر ملکی کارکنوں کے لیے "کفالۃ" کے نظام کو منسوخ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے، جس کی جگہ آجرین اور ملازمین...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے