23.3 C
Islamabad
بدھ, دسمبر 2, 2020

پاکستان میں موجود ‘نیا ایورسٹ’

تازہ ترین

شہباز، حمزہ نے پیرول پر رہائی میں توسیع کی درخواست دی، پھر بھی نہیں لی، وزیر قانون پنجاب

وزیر قانون راجہ بشارت کا کہنا ہے کہ قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور ان کے بیٹے حمزہ شہباز کی درخواست پر پیرول کی...

برطانیہ: کورونا ویکسین کی منظوری دے دی گئی، پاکستان میں جنوری تک دستیاب ہوگی

برطانیہ نے فائزر بائیوٹک کورونا ویکسین کی منظوری دے دی، برطانوی وزارت صحت کے مطابق کورونا ویکسین کی دستیابی 7 سے 9 دسمبر کے...

کرونا وائرس اور معاشی بحران، پاکستان میں ناکافی غذائیت کا مسئلہ مزید پیچیدہ ہو گیا

اگست 2018ء میں عمران خان نے برسرِ اقتدار آتے ہی جن مسائل سے نمٹنے کا عزم ظاہر کیا تھا، ان میں ناکافی غذائیت (malnutrition)...

ہم اسلام آباد کے راستے میں ہوں گے اور حکومت چلی جائے گی، رانا ثناء اللہ

پاکستان مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ نے دعویٰ کیا ہے کہ لاہور میں ہونے والے پی ڈی ایم جلسے میں...
- Advertisement -

کیا آپ دنیا کے اُس بلند ترین پہاڑ کے بارے میں جانتے ہیں کہ جسے آج تک سر نہیں کیا جا سکا؟ یہ ویسے تو دنیا کی بلند ترین پہاڑی چوٹی نہیں اور نہ ہی اسے سر کرنا اتنا مشکل ہے۔ اسے تو مشہور کوہ پیما رینالڈ میزنر بھی خاطر میں نہیں لائے ہوں گے اور نہ ہی یہ نیشنل جیوگرافک کی کسی خاص قسط کا موضوع بنی ہے۔ تو آخر دنیا کیوں پاکستان کی 7,453 میٹر بلند چوٹی ‘موچو چھیش’ کی دیوانی ہوئی جا رہی ہے؟

دراصل ان تمام پہاڑوں میں کہ جن کی چوٹی پر کبھی کسی انسان کا قدم نہیں پہنچا، کوئی پرچم نہیں لہرایا یا ان کی بلندی سے کھینچی گئی تصویر انسٹاگرام یا وڈیو یوٹیوب کی زینت نہیں بنی، ان سب میں موچو چھیش دنیا کی بلند ترین چوٹی ہے۔

دنیا کی بلند ترین پہاڑی چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ 1953ء میں سر ہوئی تھی۔ اگلے سال دوسرا بلند ترین پہاڑ K2 سر ہوا، پھر ایک سال بعد یعنی 1955ء میں تیسرے نمبر پر موجود کنچن جنگا کی باری آئی اور 1956ء میں دنیا کا چوتھا بلند ترین پہاڑ لوتسے بھی۔ ایسا کوئی قابلِ ذکر پہاڑ نہیں کہ جہاں انسان کے قدم نہ پہنچے ہوں، ہاں! 61 ویں نمبر پر موجود موچو چھیش وہ چوٹی ہے جو ابھی تک سر نہیں ہوئی۔

یہ چوٹی پاکستان میں کوہِ قراقرم کے بتورا سلسلے میں واقع ہے، اس لیے اسے بتورا V بھی کہا جاتا ہے۔ مغربی قراقرم کے اس سلسلے میں 7 ہزار میٹرز سے زیادہ بلندی رکھنے والی کئی چوٹیاں ہیں اور انہی کے دامن میں قطبین سے باہر دنیا کے بڑے گلیشیئرز میں سے ایک ‘بتورا گلیشیئر’ بھی واقع ہے۔

ویسے تو بھوٹان میں واقع گنگ کھار پونسم بھی ہے، جس کی بلندی 7,570 میٹر ہے، یعنی درحقیقت یہ اس وقت دنیا کا بلند ترین پہاڑ ہے جو سر نہیں ہوا لیکن بھوٹان میں 2003ء سے کوہ پیمائی پر پابندی ہے یعنی اسے سر کیا بھی نہیں جا سکتا۔ یہی وجہ ہے کہ موچو چھیش پر اس وقت سب کی نظریں ہیں۔

2014ء میں برطانوی کوہ پیماؤں کی ایک ٹیم نے موچو چھیش کو سر کرنے کی کوشش کی تھی۔ وہ اس میں کامیاب نہیں ہو پائے تھے، 6 ہزار میٹرز تک پہنچنے کے بعد بوجہ موسم اور چوٹی تک جانے کے راستے میں ایک برفانی حصے کے کہ جسے پار کرنا ان کے لیے ذرا مشکل تھا۔ اس مہم کے ایک رکن فل ڈی بیجر کا کہنا ہے کہ قراقرم میں دنیا کے بلند ترین پہاڑ ہیں اور یہ ایڈونچر سے بھرپور جگہ ہے۔ جبکہ ان کے ساتھ ٹم اوٹس نے کہا کہ ہنزہ بہت ہی خوبصورت جگہ ہے، غالباً میرے دیکھے گئے مقامات میں سب سے خوبصورت۔ مقامی لوگوں بہت خوش اخلاق ہیں اور دل سے خیر مقدم کرتے ہیں۔

رواں سال اگست میں چیک جمہوریہ سے تعلق رکھنے والے تین کوہ پیماؤں نے بھی چوٹی سر کرنے کی کوشش کی۔ ان میں 57 سالہ کوہ پیما، اور سیاست دان، پاول برن بھی شامل تھے۔ وہ چیک دارالحکومت پراگ کے سابق میئر ہیں اور ایورسٹ اور K2 سر کرنے کے کارنامے بھی انجام دے چکے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم وہاں پہنچنا چاہتے ہیں جہاں کسی انسان کا قدم نہیں پہنچا۔ یہ تینوں بھی اسی برفانی تودے تک ہی پہنچ پائے، جہاں سے چھ سال پہلے برطانوی ٹیم واپس آئی تھی۔

اب دیکھتے ہیں کہ موچو چھیش کا یہ ریکارڈ کب تک قائم رہتا ہے؟

مزید تحاریر

شہباز، حمزہ نے پیرول پر رہائی میں توسیع کی درخواست دی، پھر بھی نہیں لی، وزیر قانون پنجاب

وزیر قانون راجہ بشارت کا کہنا ہے کہ قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور ان کے بیٹے حمزہ شہباز کی درخواست پر پیرول کی...

برطانیہ: کورونا ویکسین کی منظوری دے دی گئی، پاکستان میں جنوری تک دستیاب ہوگی

برطانیہ نے فائزر بائیوٹک کورونا ویکسین کی منظوری دے دی، برطانوی وزارت صحت کے مطابق کورونا ویکسین کی دستیابی 7 سے 9 دسمبر کے...

کرونا وائرس اور معاشی بحران، پاکستان میں ناکافی غذائیت کا مسئلہ مزید پیچیدہ ہو گیا

اگست 2018ء میں عمران خان نے برسرِ اقتدار آتے ہی جن مسائل سے نمٹنے کا عزم ظاہر کیا تھا، ان میں ناکافی غذائیت (malnutrition)...

ہم اسلام آباد کے راستے میں ہوں گے اور حکومت چلی جائے گی، رانا ثناء اللہ

پاکستان مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ نے دعویٰ کیا ہے کہ لاہور میں ہونے والے پی ڈی ایم جلسے میں...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے