28.2 C
Islamabad
پیر, اگست 2, 2021

مت سمجھو ہم نے بھلا دیا! سانحہ اے پی ایس کو 6 سال بیت گئے

تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...
- Advertisement -

16 دسمبر کی صبح، مائیں اپنے بچوں کو الوداع کر رہی ہیں، باپ اپنے لخت جگر کو اسکول چھوڑنے جارہا ہے، لیکن ان بچوں کے والدین کو شاید نہیں معلوم کہ آج اپنے پیاروں کے ساتھ ان کی آخری ملاقات تھی۔

سانحہ آرمی پبلک اسکول پشاور کو آج 6 سال بیت گئے لیکن بچوں اور اساتذہ کی یاد آج بھی زندہ ہے۔ 2014 کو آج ہی کے دن دہشت گردوں نے پشاور کے معصوم بچوں کو خون میں نہلادیا۔ اس دن اے پی ایس کے 125 بچوں سمیت 151 افراد شہید ہوئے تھے۔ اس حوالے سے ملک بھر میں آج آرمی پبلک اسکول کے شہداء کی یاد تازہ کرتے ہوئے انہیں خراج عقیدت پیش کیا جارہا ہے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے آرمی پبلک اسکول پشاور کے شہدا کی برسی پر عوام کو پیغام دیا۔ انہوں نے کہا کہ 16 دسمبر کا دن آرمی پبلک اسکول کے شہداء کی عظیم قربانیوں کی یاد ہمیشہ تازہ کرتا رہے گا۔ قوم آرمی پبلک اسکول کے بچوں اور اساتذہ کی لازوال قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ اے پی ایس کے شہداء کی عظیم قربانیوں کے طفیل دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پوری قوم کا مثالی اتحاد اور اتفاق سامنے آیا۔ آج یہ ثابت ہوچکا ہے کہ ان سفاک دشمنوں کو شکست ہوئی اور پاکستان امن کا گہوارہ بنا۔

اس موقع پر اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ اے پی ایس آج بھی ہمارے دل میں روز اول کی طرح تازہ ہے۔ یہ وہ موقع تھا جب پوری قوم دہشت گردوں کے خلاف متحد ہوگئی اور ہماری مسلح افواج نے پوری قوم کی مدد سے دہشتگردی کا قلع قمع کیا۔

ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری نے لکھا کہ اے پی ایس پشاور کے بارے میں زیادہ لکھا نہیں جاسکتا کیونکہ یہ درد ناقابل برداشت ہے۔ مستقبل میں خدا پوری انسانیت کو ایسا کوئی واقعہ نہ دکھائے۔ گورنر سندھ عمران اسماعیل کا اس موقع پر کہنا تھا کہ 16 دسمبر جیسا درد ناک دن آئندہ کبھی نہیں آنے دیں گے۔

مزید تحاریر

مقبوضہ کشمیر کے تاجر، پاک-بھارت تجارت شروع ہونے کے منتظر

صرف دو سال پہلے عامر عطا اللہ کہتے تھے کہ پاکستانی سرحد کے قریب واقع قصبہ اُڑی میں تاجر کی حیثیت سے ان کا...

گزشتہ 75 سالوں میں آبدوزوں کے صرف 2 شکار، ایک پاکستانی آبدوز نے کیا

دوسری جنگِ عظیم کے دوران دشمن کے بحری جہازوں کو تباہ کرنے میں آبدوزوں نے بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ نازی جرمنی کی...

گھانا کی نئی قومی مسجد ایک اہم سیاحتی مقام بن گئی

مغربی افریقہ کے ملک گھانا کی نئی قومی مسجد ایک مقبول سیاحتی مقام بن گئی ہے اور نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی...

تیل کا اخراج، تاریخ کے سب سے بڑے حادثات

اِس وقت کراچی کے ساحل پر ایک بحری جہاز 'ایم وی ہینگ ٹونگ 77' پھنسا ہوا ہے۔ گو کہ یہ ایک کنٹینر شپ ہے...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے