8.9 C
Islamabad
منگل, جنوری 26, 2021

پاپا آج آپ بہت یاد ائے – یشفین جمال

تازہ ترین

شاخِ زیتون پہ چہکتے گیلے تیتر – احمدحماد

قدیم یونان کے سات دانشمندوں سے ایک کا نام طالیس تھا۔ کہا جاتا ہے کہ یہ طالیس ہی تھا جس نے پہلے پہل یہ...

کورونا کے خاتمے تک قرضوں کی ادائیگی میں رعایت دی جائے، وزیر اعظم

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس کے ختم ہونے تک مقروض ممالک پر قرضہ واپسی کے حوالے سے...

جمعرات کو چاند عین خانہ کعبہ کے اوپر ہوگا

جمعرات 28 جنوری کو سعودی عرب کے مقامی وقت کے مطابق رات 12:43 پر چودہویں کا چاند عین خانہ کعبہ کے اوپر ہوگا۔ جدہ آسٹرونومی...

پاک-جنوبی افریقہ تاریخی ٹیسٹ، پاکستان ان کھلاڑیوں میں سے انتخاب کرے گا

پاک-جنوبی افریقہ تاریخی ٹیسٹ کل یعنی منگل سے کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں شروع ہو رہا ہے۔ پاکستان نے اپنے 20 رکنی ابتدائی اسکواڈ میں...
- Advertisement -

آج 25 دسمبر ہے، لیکن پچھلے 25 دسمبر سے بالکل مختلف۔ اُداس اور بجھا بجھا سا۔ دِل مغموم اور روح مضطرب سی ہے۔ ایک بے نام سا دُکھ ہے جو پورے وجود کو گھیرے ہوئے ہے۔ دل ودماغ میں اُداسی نے ڈیرے ڈال رکھے ہیں۔ ایک بہت قیمتی رشتے کو کھودینے کا احساس ہر احساس پر غالب ہے۔

آج پاپا کی سالگرہ کا دن ہے۔ پہلی سالگرہ جب وہ ہمارے درمیان نہیں۔ کیا ہم ان کے بغیر آج کا دن گزاریں گے؟ میں اپنے آپ سے سوال کرتی ہوں۔ میری آنکھیں نم ہوجاتی ہیں۔ ایک البم میرے سامنے کھل جاتا ہے۔ بے شمار قیمتی تصویریں جس میں ہیں۔ کہیں پاپا کے قہقہے، کہیں ان کی مسکراہٹیں۔ کہیں ان کی پیار بھری ڈانٹ۔

پاپا کے ساتھ گزارے ہوئے لمحات ذہن کی اسکرین پر ایک فلم کی طرح چل رہے ہیں۔ ان کی شفقت، ان کی محبت، ان کی زندہ دلی، ان کی سخاوت، ان کا خلوص، ان کی پُرعزم شخصیت اور ان کا وجاہت سے بھرپور روشن چہرہ، ایسا لگتا ہے جیسے چھپرچھاؤں چھن گئی ہے او رتپتی دھوپ روح تک کو جھلسارہی ہے۔

وہ ایک عظیم انسان تھے۔ خود سے جڑے ہر رشتے سے بے حد محبت کرنے والے۔ ہر ایک کا خیال رکھنے والے۔ جب میرا رشتہ مانگنے بابا کے پاس آئے تو کہنے لگے میں یشفین کو اپنی بیٹی بنانا چاہتا ہوں۔ بابا نے کہا آپ نے بیٹی بنانے کا کہہ دیا تو انکار کی گنجائش ہی نہیں چھوڑی۔ اور پھر واقعی انہوں نے جو کہا تھا، پورا کرکے دکھادیا۔ حقیقی بیٹی سے زیادہ محبت، عزت اور احترام دیا۔

شادی کے بعد پاپا کے ہوتے ہوئے کبھی پریشانی کا منہ نہیں دیکھا۔ جہاں کوئی پریشانی آتی، فورا پاپا ذہن میں آجاتے۔ گویا ان کے پاس الہ دین کا چراغ ہے۔ یہاں مسئلہ بتایا، وہاں حل سامنے نظر آیا۔ کہتے تھے جب تک میں زندہ ہوں، تم لوگ عیاشی کرو۔ کوشش کروں گا تم لوگ میرے ہوتے دُکھ نہ دیکھو، پریشانی کا سامنا نہ ہو۔ ان کے بس میں ہوتا تو وہ ہمیں غم اور دُکھ درد کے مفہوم سے ناآشنا کردیتے۔

پاپا ہمارے لیے شجرِ سایہ دار تھے، جس کی ٹھنڈی چھاؤں ہماری ساری کلفتیں دور کردیتی تھی۔

”قلم کیمرا“ شروع کیا تو کہنے لگے: تم نے کام شروع کیا ہے، 50 ہزار میری طرف سے۔ میں نے ہنس کر کہا: پاپا! میں نے کوئی خیراتی ادارہ تو نہیں کھول رکھا۔ کہنے لگے: لے لو بیٹا! بعد میں کون دے گا؟
تمہارے بعد کہاں یہ وفاکے ہنگامے
کوئی کہاں سے تمہارا جواب لائے گا!

مجھ سے بہت محبت کرتے تھے۔ سیاست پر سیر حاصل گفتگو کرتے۔ ہر شو کے بعد کال کرتے۔ تفصیلی تبصرہ کرتے اور کہتے مجھے خود کال کیا کرو۔ تمہارا میاں تو ”جھلا“ ہے، وہ ان چیزوں میں دلچسپی نہیں لیتا، مجھ سے شیئر کیا کرو۔ میری اور تمہاری دلچسپی ایک ہے۔ ہر ایشو پر کھل کر اپنی رائے کا اظہار کرتے۔ ہم مخالفت کرتے، دلیل سے اپنی بات سمجھاتے۔

فوج میں زندگی گزری۔ آخری وقت تک فوجی کی سی زندگی گزارتے رہے۔ فرض شناسی کوٹ کوٹ کر بھری ہوئی تھی۔ ایمانداری ایسی کہ ہم کسی اور دنیا کا انسان سمجھتے۔ ایک ایک پیسے کا حساب رکھتے۔ لوگ کہتے ہیں کہ اگر ایک آنکھ بند کرتے تو کروڑ پتی ہوتے، مگر کسی کی مجال تھی جو انہیں کسی قسم کے لالچ دینے کی جرات بھی کرتا۔

کبھی کسی کے دباؤ میں نہیں آئے۔ ایک دفعہ کسی کیس کی تحقیقات کرہے تھے۔ انہیں کال موصول ہوئی۔ کہا گیا آپ کے بچے اس روٹ سے اسکول جاتے ہیں۔ پاپا کہنے لگے: روٹ تو تمہیں معلوم ہوگیا ہے، گاڑی کا نمبر میں بتادیتا ہوں تاکہ تمہیں زیادہ پریشانی نہ ہو۔ جو کرنا چاہتے ہو، کرلو۔ میں اپنے فرض سے ایک انچ پیچھے نہیں ہٹوں گا۔

زندگی کا اکثر حصہ فوج میں گزرا۔ بہت سوں کا خیال تھا کہ بہت سنجیدہ طبیعت پائی ہوگی۔ لیکن ہنسنے ہنسانے والے تھے۔ ہماری چھوٹی چھوٹی خوشیوں اور کامیابیوں کو بھرپور طریقے سے مناتے۔ کئی تقریبات میں خود آگے بڑھ جاتے او رکہتے آجاؤ تم لوگ بھی۔ خوشی کی تقریب ہے، ایسی تقریبات انجوائے کرنی چاہییں۔ اور پھر خوب ہلہ گلہ ہوتا۔ بچوں کے ساتھ بچے بن جاتے۔

میرے بچوں کے ساتھ بے حد محبت کرتے تھے۔ ان کی خواہش کا احترام کرتے۔ فون پر لمبی لمبی باتیں کرتے۔ ارحہ (بڑی بیٹی) تو ہماری شکایتیں لگا لگاکر ہمیں ڈانٹ بھی پڑوادیتی تھی۔

پاپا نے اپنا ہر رشتہ ایسے نبھایا کہ اس کا حق ادا کردیا۔ ہر روپ میں بہترین انسان ثابت ہوئے۔ ان کے جانے کے بعد بہت سے لوگ آئے، جنہیں ہم جانتے تک نہیں تھے۔ وہ زاروقطار روتے اور کہتے جاتے کرنل صاحب ہمارے محسن تھے۔ انہوں نے ہماری زندگی بدل دی۔ انہوں نے ہمیں فلاں موقع پر بڑی آزمائش سے بچالیا۔ ان کے جانے سے ہم یتیم ہوگئے ہیں۔

ڈھونڈوگے ہمیں ملکوں ملکوں
ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم

اکثر پاپا اس بات پر اُداس ہوجاتے کہ فوج میں تھا۔ اگر شہادت نصیب ہوجاتی تو کتنی بڑی خوش بختی تھی۔ مجھے مذہب سے متعلق زیادہ علم نہیں، لیکن کہا یہی جاتا ہے کہ وبا میں جان دینے والوں کو بھی رتبہ شہادت کا ملتا ہے۔ لحد میں اُتارتے وقت تک جسم سے تازہ خون رس رہا تھا۔ چہرہ ایسا روشن کہ دیکھنے والے رشک کرتے۔

جس دن پاپا وینٹی لیٹر پر گئے، اس سے د ودن پہلے جمال (بیٹے) کو بلاکر کہا کہ میرے اکائونٹ میں پیسے ہیں، جو کسی نے عطیہ کرنے کو دیے ہیں۔ وہ اسی مد میں خرچ کرنا، ان پر تمہارا کوئی حق نہیں ہے۔

پاپا کی زندگی پر لکھنے بیٹھوں تو پوری کتاب مرتب ہوجائے۔ وہ گفتار کے نہیں، کردار کے غازی تھے۔ اپنے شیریں انداز بیاں سے دل جیت لینے والے میرے عظیم پاپا! میرے لیے سراپا محبت وشفقت! ان کی جدائی نے مجھے سمجھایا کہ صبر کرنا واقعی بہت مشکل کام ہوتا ہے۔ لیکن یہ سوچ کر صبر آجاتا ہے کہ پاپا جہاں گئے ہیں، وہاں زیادہ سکون میں ہوں گے۔

زندگانی تھی تری مہتاب سے تابندہ تر
خوب تر تھا صبح کے تارے سے بھی تیرا سفر
مثلِ ایوان سحر مرقد فروزاں ہو تیرا
نور سے معمور یہ خاکی شبستانی ہو ترا

مزید تحاریر

شاخِ زیتون پہ چہکتے گیلے تیتر – احمدحماد

قدیم یونان کے سات دانشمندوں سے ایک کا نام طالیس تھا۔ کہا جاتا ہے کہ یہ طالیس ہی تھا جس نے پہلے پہل یہ...

کورونا کے خاتمے تک قرضوں کی ادائیگی میں رعایت دی جائے، وزیر اعظم

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس کے ختم ہونے تک مقروض ممالک پر قرضہ واپسی کے حوالے سے...

جمعرات کو چاند عین خانہ کعبہ کے اوپر ہوگا

جمعرات 28 جنوری کو سعودی عرب کے مقامی وقت کے مطابق رات 12:43 پر چودہویں کا چاند عین خانہ کعبہ کے اوپر ہوگا۔ جدہ آسٹرونومی...

پاک-جنوبی افریقہ تاریخی ٹیسٹ، پاکستان ان کھلاڑیوں میں سے انتخاب کرے گا

پاک-جنوبی افریقہ تاریخی ٹیسٹ کل یعنی منگل سے کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں شروع ہو رہا ہے۔ پاکستان نے اپنے 20 رکنی ابتدائی اسکواڈ میں...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے