13.3 C
Islamabad
بدھ, مارچ 3, 2021

پاک-جنوبی افریقہ تاریخی ٹیسٹ، پاکستان ان کھلاڑیوں میں سے انتخاب کرے گا

تازہ ترین

شاہد آفریدی کی ‘برتھ ڈے ٹوئٹ’، کہیں ریکارڈ نہ بدل جائے؟

شاہد آفریدی نے 25 سال پہلے اپنی پہلی ون ڈے اننگز میں صرف 37 گیندوں پر سنچری بنائی تھی، جو کرکٹ تاریخ کی تیز...

یوسف رضا گیلانی کو سینیٹ انتخابات میں فتح ہوگی، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن رہنما اور قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف میں اپنے ہی اراکین...

بھارت سے کپاس کی درآمد کا امکان، ٹیکسٹائل ملز ناخوش

لائن آف کنٹرول پر سیزفائر معاہدے کی بحالی کے بعد پاک-بھارت تعلقات کی مرحلہ وار بحالی کا امکان ہے اور ہو سکتا ہے کہ...

پاکستان اضافی بجلی سے بٹ کوائن بنا کر اپنا تمام قرضہ اتار سکتا ہے

حکومتِ پاکستان کا کہنا ہے کہ اس وقت ملک کی ضرورت سے زیادہ بجلی پوری ہو رہی ہے تو آخر پاکستان بٹ کوائن مائننگ...
- Advertisement -

پاک-جنوبی افریقہ تاریخی ٹیسٹ کل یعنی منگل سے کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں شروع ہو رہا ہے۔

پاکستان نے اپنے 20 رکنی ابتدائی اسکواڈ میں سے ان 17 کھلاڑیوں کے نام ظاہر کر دیے ہیں کہ جن سے فائنل الیون کا انتخاب کیا جائے گا۔ پہلے ٹیسٹ کے لیے جن تین کھلاڑیوں کے ناموں کے انتخاب پر غور نہیں کیا جائے گا ان میں کامران غلام، عبد اللہ شفیق اور سلمان علی آغا شامل ہیں۔ یہ تینوں بدستور ٹیم کا حصہ رہیں گے لیکن فائنل الیون میں شامل نہیں کیے جائیں گے۔

یعنی اب ٹیم کا انتخاب باقی ماندہ 17 کھلاڑیوں میں سے ہوگا، جن میں 6 ایسے ہیں جنہوں نے کبھی کوئی ٹیسٹ نہیں کھیلا۔ ان میں اوپنر عمران بٹ، مڈل آرڈر بیٹسمین سعود شکیل، اسپنر نعمان علی اور ساجد خان اور فاسٹ باؤلر حارث رؤف اور تابش خان شامل ہیں۔

پاکستان کے ہیڈ کوچ مصباح الحق کہتے ہیں کہ ہمیں ہوم کنڈیشنز کا اچھی طرح اندازہ ہے اور یہ موقع ہے کہ ہم اچھی کرکٹ کھیلیں اور جیتیں۔

نیشنل اسٹیڈیم ‘پاکستان کا قلعہ’ سمجھا جاتا ہے۔ آج تک یہاں کھیلے گئے 44 ٹیسٹ میچز میں سے پاکستان کو صرف 2 میچز میں شکست ہوئی ہے۔ لیکن ان میں سے ایک ٹیسٹ وہ ہے جو جنوبی افریقہ کے آخری دورۂ پاکستان 2007ء میں ہارا گیا تھا۔ جنوبی افریقہ کے علاوہ انگلینڈ واحد ٹیم ہے جو کراچی میں جیت چکی ہے جس نے 2000ء میں پاکستان کا کراچی میں ناقابلِ شکست رہنے کا ریکارڈ توڑا تھا۔

کراچی میں آخری ٹیسٹ دسمبر 2019ء میں کھیلا گیا تھا، 10 سال کے وقفے کے بعد۔ اُس میچ میں عابد علی، بابر اعظم اور اظہر علی نے سنچریاں بنائی تھیں اور پاکستان نے 263 رنز سے کامیابی حاصل کی تھی۔

لیکن اب حالات کافی بدل چکے ہیں، مصباح کہتے ہیں کہ جنوبی افریقہ کو شکست دینے کے لیے ہمیں اپنی فیلڈنگ خامیوں پر قابو پانا ہوگا۔

اس کی وجہ پاکستان کے حالیہ دورۂ نیوزی لینڈ میں ‏2-0 کی شکست ہے، جہاں قومی کھلاڑیوں نے کئی مواقع ضائع کیے۔ مصباح نے کہا کہ ہم نیوزی لینڈ میں پیش کی گئی کارکردگی سے بالکل مطمئن نہیں، ہمیں اسے کافی بہتر بنانا ہوگا۔

جب سے مصباح الحق اور وقار یونس نے کوچنگ کی ذمہ داریاں سنبھالی ہیں، پاکستان سری لنکا کے خلاف ہوم ٹیسٹ سیریز اور بنگلہ دیش کے دورے میں کھیلا گیا واحد ٹیسٹ جیت چکا ہے لیکن بیرونِ ملک اس کا ریکارڈ مایوس کن ہے اور اسے آسٹریلیا، انگلینڈ اور نیوزی لینڈ میں شکست کا منہ دیکھنا پڑا۔

سیریز کا دوسرا ٹیسٹ 8 فروری سے راولپنڈی میں کھیلا جائے گا جس کے بعد 11 سے 14 فروری تک لاہور میں تین میچز پر مشتمل ٹی ٹوئنٹی سیریز ہوگی۔

پہلے ٹیسٹ کے لیے فائنل اسکواڈ کا انتخاب ان کھلاڑیوں میں سے کیا جائے گا:

بابر اعظم (کپتان)، اظہر علی، تابش خان، حارث رؤف، حسن علی، ساجد خان، سرفراز احمد، سعود شکیل، شاہین آفریدی، عابد علی، عمران بٹ، فہیم اشرف، فواد عالم، محمد رضوان، محمد نواز، نعمان علی اور یاسر شاہ۔

مزید تحاریر

شاہد آفریدی کی ‘برتھ ڈے ٹوئٹ’، کہیں ریکارڈ نہ بدل جائے؟

شاہد آفریدی نے 25 سال پہلے اپنی پہلی ون ڈے اننگز میں صرف 37 گیندوں پر سنچری بنائی تھی، جو کرکٹ تاریخ کی تیز...

یوسف رضا گیلانی کو سینیٹ انتخابات میں فتح ہوگی، حمزہ شہباز

پاکستان مسلم لیگ ن رہنما اور قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف میں اپنے ہی اراکین...

بھارت سے کپاس کی درآمد کا امکان، ٹیکسٹائل ملز ناخوش

لائن آف کنٹرول پر سیزفائر معاہدے کی بحالی کے بعد پاک-بھارت تعلقات کی مرحلہ وار بحالی کا امکان ہے اور ہو سکتا ہے کہ...

پاکستان اضافی بجلی سے بٹ کوائن بنا کر اپنا تمام قرضہ اتار سکتا ہے

حکومتِ پاکستان کا کہنا ہے کہ اس وقت ملک کی ضرورت سے زیادہ بجلی پوری ہو رہی ہے تو آخر پاکستان بٹ کوائن مائننگ...

جواب دیں

اپنا تبصرہ لکھیں
یہاں اپنا نام لکھئے